ریاض: حاملہ خواتین کو بھی کورونا ویکسین لگوانے کی اجازت مل گئی

216

ریاض: سعودی عرب میں حاملہ خواتین کو کورونا سے تحفظ فراہم کرتی ویکسین کے استعمال کی اجازت مل گئی ہے اورحکومت کی جانب سے ویکسین لگوانے کی بھی اجازت دے دی گئی ہے۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق سعودی عرب میں خصوصی سائنس کمیٹی کی سفارشات کی بنیاد پر حاملہ خواتین کو بھی کورونا ویکسین لگانے کی اجازت دیدی گئی ہے۔

سعودی وزارتِ صحت نے اعلان کیا ہے کہ حاملہ خواتین بھی کورونا ویکسین لگوانے کے لیے خود کو رجسٹرڈ کروا سکتی ہیں کیوں کہ ٹرائل میں فائزر کی کورونا ویکسین کا حمل میں بے ضرر ہونا ثابت ہوگیا ہے۔

سعودی وزارتِ صحت نے ٹوئٹر پر جاری ایک بیان میں کہا کہ حاملہ خواتین اب کورونا سے بچاؤ کی ویکسین کیلئے اپنا اندراج کرواسکتی ہیں کیونکہ حاملہ خواتین کے لیے بھی اب اینٹی کوویڈ 19 ویکسین دستیاب ہیں۔

خیال رہے گزشتہ ہفتے متحدہ عرب امارات نے بھی ایسی خواتین جو بچوں کو دودھ پلا رہی ہیں کو بھی فائزر کی کورونا ویکسین لگانے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ ایسی خواتین جو حاملہ ہونے کے لیے علاج کروا رہی ہیں انہیں بھی ویکسین لگانے کا عندیہ دیا گیا ہے۔

سعودی وزارتِ صحت کی جانب سے کیے گئے اس اعلان سے قبل اس حوالے سے ایک تحقیقاتی رپورٹ سامنے آئی تھی جس میں بتایا گیا تھا کہ کورونا ویکسین حاملہ عورتوں کیلیے بھی عام عورتوں کی طرح محفوظ ہے۔

دوسری جانب پاکستان نے حاملہ خواتین کو کورونا ویکسین لگانے سے اجتناب برتنے کی ہدایت کی گئی ہے اور یہ ہدایت پاکستان میں دستیاب چین اور روس کی کورونا ویکسینز سائینو فارم، کین سائینو بائیو، سائنو ویک اور اسپوتنک وی سے متعلق ہے کیوں کہ ان ویکسنز کے حاملہ خواتین پر ٹرائل موجود نہیں ہے۔

نیو انگلینڈ جرنل آف میڈیسن میں شائع ہونے والی ایک ریسرچ میں کہا گیا ہے کہ امریکا میں 35 ہزار حاملہ خواتین پر فائزر اور میڈورنا کی کورونا ویکسین استعمال کرائی گئیں ہےجس کے دوران ان ویکسنز کے حاملہ خواتین میں محفوظ ہونے کے سائنسی شواہد ملے ہیں۔

واضح رہے کہ ابتدا میں کورونا ویکسین کے ٹرائل حاملہ خواتین پر نہیں ہوئے تھے اس لیے دوران حمل ویکسین لگانے کی سفارش نہیں کی گئی تھی، تاہم اب فائزر اور میڈورنا نے حاملہ خواتین پر ٹرائل بھی مکمل کرلیا ہے۔