چار ارب سالہ قدیم شہابی پتھر دریافت

309

لندن: برطانوی ماہرین فلکیات نے زمین سے بھی قدیم شہابی پتھر کو دریافت کرنے کا دعویٰ کیا ہے، ماہرین فلکیات کا دعویٰ ہے کہ یہ کروڑوں سال قدیم پتھرہے۔

بین الاقوامی جریدےکے مطابق ماہرین فلکیات نے دعویٰ کیا ہےکہ انہوں نے چار ارب سالہ قدیم پتھر دریافت کرلیا ہے، یہ پتھر کسی خلائی چٹان کا ٹکڑا ہے جس کی عمر زمین سے بھی زیادہ اور سورج کی پیدائش سے بھی قدیم ہے۔

ماہرین فلکیات کے مطابق پتھر کو برطانیہ کے قدرتی اور تاریخی عجائب گھر میں نمائش کے لیے رکھا گیا ہے۔

ماہرین کے مطابق اس پتھر کی مدد سے پانی کہاں سے آتا ہے، زمین کس طرح اور کب وجود میں آئی کے جوابات حاصل ہوسکیں گےجبکہ یہ شہابی پتھر برطانیہ کے شمالی علاقے سے دریافت ہوا ہے۔

ان کا کا ماننا ہے کہ زمین پر اس طرح کے پتھر اینڈیسائٹ کہلاتے ہیں جو ارضیاتی سبڈکشن زون میں عام پائے جاتے ہیں اور ان مقامات پر زمین کی قدرتی ارضیاتی پلیٹیں ملتی ہیں اور ایک دوسرے سے نبردآزما رہتی ہیں۔

واضح رہے اب تک جو پتھریلے شہابئے ملے ہیں وہ بیسالٹ سے بنے ہیں اور ابتدائی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ یہ پگھلے ہوئے مادے سے بنا ہے اور اپنی فطرت میں آتش فشانی ہے، پھر چار ارب ساٹھ کروڑ سال قبل یہ جم کر ٹھوس شکل اختیار کرگیا تھا۔

خیال ہےکہ یہ شہابی پتھر کسی ایسے ناکام سیارے یا پروٹوپلانیٹ کا حصہ رہا ہے جو سیارہ تو نہ بن سکا لیکن ٹوٹ پھوٹ کر کہیں بکھر گیا، تاہم ماہرین اس پر مزید تحقیق کرکے اس کے رازوں سے ہمیں آگاہ کریں گے۔