مستونگ ،قلت آب کا مسئلہ شدت اختیار کرگیا،شہری پریشان

102

 

مستونگ (این این آئی) مستونگ شہر و گردونواح میں قلت آب کا مسئلہ شدت اختیار کرگیا، شہر کے بیشتر واٹر سپلائی ٹیوب ویلز کی خرابی کی وجہ سے مختلف علاقوں میں کئی دنوں سے پانی ناپید، ٹینکر مافیا کی چاندی ہوگئی، ماہ مقدس میں شہر کربلا کا منظر پیش کررہا ہے۔ ماہ مقدس رمضان المبارک میں گزشتہ ایک ہفتے سے محکمہ پی ایچ ای کی غفلت و نااہلی کی وجہ سے واٹر سپلائی ٹیوب ویلوں کی خرابی، بجلی بل کا بہانہ، آماچ کے بیشتر آبنوشی ٹیوب ویلز بند ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے شہر کے بیشتر علاقوں کلی بہرام شہی، محمد شہی بازار، ٹنڈلان، مہتران، عزیز آباد سمیت دیگر تمام علاقوں میں پینے کا پانی بالکل ناپید ہوچکا ہے، جس کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ محکمہ پی ایچ ای کے نااہل اور کرپشن زدہ حکام کی نااہلی و نالائقی کی وجہ سے ماہ مقدس میں روزہ داران پانی کی ایک ایک بوند کو ترسنے لگے۔ پی ایچ ای اور ٹینکر مافیا کا گٹھ جوڑ عوام مہنگے داموں پانی خریدنے پر مجبور ہوچکے ہیں، نااہل پی ایچ ای ایکسین ایس ڈی او سمیت دیگر ذمے دار حکام کی نااہلی اور کرپشن کو دوام دینے کے لیے ہر مہینہ میں کبھی بجلی کے بل تو کبھی مشینری کی خرابی کے نام پر دس دس روز شہر کے عوام پر پانی بند کردیا جاتا ہے جبکہ مشینری کی خرابی دور کرنے کے لیے ٹھیکیدار بھی محکمے کا ملازم ہے جو کرپشن کا ذریعہ بنا ہوا ہے، شہر میں عوام پینے کے پانی سے محروم، در در سرگردان گھومتے ہیں مگر یہ نااہل و کرپٹ حکام ٹس سے مس نہیں ہوتے۔ شہر کو پانی سپلائی کرنے کے لیے آماچ میں کروڑوں روپے کی خطیر رقم سے متعدد سولر سسٹم کے واٹر سپلائی لگائے گئے مگر کرپشن و کمیشن کی وجہ سے ان واٹر سپلائی اسکیمات سے بھی عوام کو کوئی فائدہ نہیں پہنچ سکا، پانی عدم دستیابی کی وجہ سے لوگ مجبوراً ماہ رمضان میں بھی تالابوں اور جوہڑوں کا مضر صحت پانی پینے پر مجبور ہیں جس سے لوگ مختلف مہلک امراض میں مبتلا ہونے لگے ہیں۔ پانی کی اس بحرانی کیفیت سے ٹینکر مافیا کی بھی چاندی ہوگئی ہے، منہ مانگی قیمتی وصول کررہے ہیں، بیشتر شہری استطاعت نہ رکھنے والے دن بھر روزے دار پانی کے حصول کے لیے بالٹی ہاتھ میں لے کر گلی کوچوں میں سرگرداں نظر آتے ہیں، ایکسیئن محکمہ پی ایچ ای کی غفلت و نااہلی کی سزا غریب عوام بھگت رہے ہیں۔ شہری اور غریب عوام پانی کی بوند بوند کے لیے ترس رہے ہیں۔ علاقے کے عوامی و سماجی حلقوں نے سیکرٹری PHE اور دیگر حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر مستونگ شہر میں قلت آب کا نوٹس لے کر شہر میں پانی کی سپلائی یقینی بنائی جائے۔