لاپتا شہریوں کی عدم بازیابی، وفاقی سیکرٹری داخلہ کو ایک اور شوکاز

132

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائیکورٹ میں لاپتا شہری سمیر خان اور دیگر کی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت، حراستی مراکز کی تفصیلات پیش نہ کرنے پر عدالت وفاقی حکومت پر برہم، وفاقی سیکرٹری داخلہ کو ایک اور شو کاز نوٹس جاری کرتے ہوئے 27 اپریل کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا۔ وکیل کے لاپتا بیٹے اور ڈرائیور کی بازیابی سے متعلق درخواست کی سماعت پر عدالت ایس پی سی ٹی ڈی حیدر آباد ایوب درانی پر برہم، تفتیشی افسر تبدیل کرنے کی ہدایت، سماعت 17 جون تک ملتوی کرتے ہوئے تفصیلات طلب کرلیں۔ گزشتہ روزسماعت پر عدالت کا
کہنا تھا کہ کئی سماعتوں سے حراستی مراکز کی رپورٹس طلب کر رہے ہیں کسی کے کان پر جوں تک نہیں رینگ رہی، ملک بھر کے حراستی مراکز اور وہاں قید شہریوں کی تفصیلات معلوم کرکے ہمیں بتائیں، عدالت نے اسٹنٹ اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ خیبر پختونخوا میں کتنے حراستی مراکز ہیں؟ سرکاری وکیل نے بتایا کہ 8 حراستی مراکز ہیں اور صوبائی حکومت کے ماتحت ہیں وفاق کا کوئی عمل دخل نہیں۔