کارسرکار میں مداخلت کے مقدمے میں حلیم عادل پر فرد جرم عاید

80

گھوٹکی(صباح نیوز)عدالت نے پی ٹی آئی رہنماواپوزیشن لیڈر سندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ پر کارسرکار میں مداخلت کے مقدمے میں فرد جرم عاید کردی ، ملزم نے تسلیم کرنے سے انکار کر دیا، سماعت 26 مئی تک ملتوی کردی گئی۔میرپورماتھیلو کی عدالت میں2019ء میں گھوٹکی کے ضمنی انتخاب کے دوران حلیم عادل شیخ پر کار سرکار میں مداخلت کے مقدمے کی سماعت کی گئی۔عدالت کی جانب سے فردجرم عاید کرنے پر ملزم نے صحت جرم سے انکار کرتے ہوئے
مقدمے کو سیاسی قرار دیا ۔ مقدمے کا مدعی پولیس افسر شیر خان بزدار عدالت میں پیش نہیں ہوا۔ عدالت نے کیس کی سماعت26 مئی تک ملتوی کردی۔حلیم عادل شیخ نے میڈیا سے گفتگومیں کہا کہ جو بھی سندھ حکومت کی کرپشن بے نقاب کرتا ہے اس پر کیس بنا دیے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے کرپشن کے ریکارڈ قائم کیے ہیں، ہر ہفتے کروڑوں روپے کتوں کے مارنے پر خرچ کیے جا رہے ہیں، کتے بھی موجود ہیں، کتے مارنے والے بھی موجود ہیں،کتے عوام کو کاٹ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سندھ تیل اور گیس کی پیداوار کا مرکز ہے لیکن کھنڈر بنا دیا گیا ہے ۔