ہائیکورٹ حملہ ،ویڈیو میں نظر نہ آنے والے وکلا کا نام مقدمے سے نکالنے کا حکم

77

اسلام آباد(اسٹاف رپورٹر)اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ کی سربراہی میں لارجر بینچ نے ہائیکورٹ چیف جسٹس بلاک حملہ اور توڑ پھوڑکے بعد وکلا کے خلاف مس کنڈکٹ کارروائی کے کیس میں کارروائی آگے بڑھانے کا معاملہ آئندہ سماعت تک ملتوی کردیا۔ گزشتہ روز سماعت کے دوران چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے کہاکہ ہمارے پاس ایک شکایت آئی ہے اور اسی کے ساتھ ویڈیو ریکارڈنگ بھی ہے،یہ کورٹ بار کو عزت دیتی ہے اس
معاملے کو ہم بار پر چھوڑتے ہیں وہ خود آکر ملوث لوگوں کے نام بتائے،دوران سماعت توہین عدالت کیس میں شامل وکیل نے عدالت کے سامنے خود کو سرنڈر کر دیا، درخواست گزار وکیل نے کہاکہ میرا نام غلطی سے آیا ہے مگر میں عدالت کو سرنڈر کرنا چاہتا ہوں،چیف جسٹس نے کہا کہ ایک شکایت آئی ہے اور اسی شکایت پر آج ہم کوئی آرڈر جاری نہیں کریں گے،جو بھی اس ویڈیو میں نہیں ہیں اس کو کوئی مسئلہ نہیں ہوگا،چیف جسٹس نے کہاکہ آئندہ سماعت پر جو لوگ واقعے میں ملوث نہیں، انکا نام نکالا جائے گا،عدالت نے کیس کی سماعت 22 اپریل تک کے لیے ملتوی کردی۔