الخدمت نے یتیم خانوں کے لیے معیار وضع کرنے کا آغاز کردیا

129

اسلام آباد (اسٹاف رپورٹر) وفاقی دارالحکومت میں ’’پاکستان میں یتیم خانوں کے لیے کم سے کم بورڈنگ معیارات‘‘ وضع کرنے کے اقدام کے آغاز کی تقریب ہوئی، جس میں وزیر اعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان شاہد اقبال اور ایگزیکٹو ڈائریکٹر الخدمت فائونڈیشن خبیب
بلال نے فورم میں الخدمت کی نمائندگی کی۔ اس موقع پر شاہد اقبال نے کہا کہ الخدمت فاؤنڈیشن یتیم بچوں کے پروگرام’’ آغوش ہومز‘‘ کی بدولت سرفہرست اور سرخیل تنظیم ہے۔ الخدمت فاؤنڈیشن یتیم بچوں کی فلاح و بہبودکے لیے جدید ترین آغوش ہومز چلا رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بلاشبہ یتیم ہمارے معاشرے کا سب سے نظرانداز طبقہ ہیں، لیکن اس غفلت اور محرومی کا خاتمہ ہوسکتا ہے بشرطیکہ ریاست، عوامی، سول سوسائٹی، میڈیا اور غیر سرکاری تنظیمیں مل کر صورتحال کو بہتر بنائیں۔ یہ ہماری اجتماعی ذمے داری ہے کہ ہم اس بچے کی پرورش کو یقینی بنائیں جس کے والدین اب اس دنیا میں نہیں۔ یتیم بچوں کی تعلیم، کردار سازی، فلاح و بہبود اور حفاظت کے لیے صحت مند اور حفاظت والے ماحول میں انتہائی نگہداشت اور محنت کے ساتھ کام کرنے والی تنظیموں کو رہنمائی اور ہدایات فراہم کرنے کے لیے بورڈنگ کے معیارات مرتب کیے گئے ہیں۔ اگرچہ ابھی اس نئے اقدام کے ذریعے مزید خوش قسمتی کا نتیجہ برآمد ہونا باقی ہے، الخدمت فاؤنڈیشن پاکستان مرد اور خواتین یتیموں اور بے سہارا بچوں کی فلاح و بہبود، مناسب نشوونما، ترقی اور بحالی کے لیے جدید ترین آغوش ہومز چلا رہا ہے۔ ہمیں یقین ہے کہ ہم کمزور یتیم بچوں کے لیے جو کچھ کر رہے ہیں وہ تاریخ کے سنہری الفاظ میں لکھا جائے گا۔