قومی بلے بازوں کو بڑا اسکور کرنے کی ضرورت ہے ، انضمام الحق

129

کراچی(اسٹاف رپورٹر) قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان انضمام الحق نے کہا ہے کہ جنوبی افریقا کے خلاف مڈل آرڈر بلے بازوں کی پارٹنر شپ کا فقدان ہے جوکہ پاکستان کے لئے کافی تشویشناک ہے، پاکستان کومضبوط بیٹنگ لائن اپ کے طور پر ابھرنے کے لیے اسکور کرنے کی ضرورت ہے، پاکستان بہت خوش قسمت رہا ہے کہ ان کے تینوں ٹاپ آرڈر بلے بازوں بابر اعظم ، فخر زمان ، اور امام الحق نے جنوبی افریقا کے خلاف ون ڈے میچوں میں رنز بنائے لیکن ان کے علاوہ کسی نے خاطرخواہ کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ ٹی ٹوئنٹی میں بھی ایسا ہی ہو رہا ہے کہ دو سے تین ٹاپ آرڈر بلے بازوں کے بعد باقی بیٹنگ لائن اپ میں کوئی بلے بازا سکور نہیں کر پا رہا،پاکستان کو ان کی مڈل آرڈر بیٹنگ کے بارے میں سوچنا ہوگا اور ایسے کھلاڑیوں کو لانے کی کوشش کرنی ہوگی جو ان کے لیے کچھ رنز بناسکیں۔ یہ ممکن نہیں ہے کہ آپ کا ٹاپ آرڈر ہر میچ میں رنز بنائے۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کی ٹیم مستقل مزاجی کے ساتھ کارکردگی کا مظاہرہ کرے تو آپ کو ایک مضبوط مڈل آرڈر کی ضرورت ہے۔نوجوان دائیں ہاتھ کے بلے باز حیدر علی کی کارکردگی پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انہیں وکٹ پر کھڑے رہنے کا فن سیکھنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے کئی میچوں میں وہ کچھ رنز بنانے کے بعد اپنی وکٹ کھو رہے ہیں۔ میں پہلے ہی بیان کرچکا ہوں کہ وہ ایک بہت ہی باصلاحیت بلے باز ہے جو اچھی بیٹنگ کی صلاحیت رکھتا ہے لیکن اسے یہ سمجھنا ہوگا کہ بڑے شاٹس لینے سے پہلے اسے کچھ وقت کریز پر گزارنا پڑے گا۔ اسے یہ سمجھنے کی کوشش کرنی ہوگی کہ کرکٹ میں رنز صرف بائونڈری اور چھکے سے نہیں بنتے۔سابق کپتان نے کہا کہ فہیم اشرف اور دیگر آل رانڈروں کو کچھ رنز بنا کر بیٹنگ میں حصہ ڈالنا ہوگا۔جنوبی افریقا کے خلاف دوسرے ٹی 20 میں پاکستان نے 140رنز بنائے تھے لیکن میرے خیال میں اگر وہ 160سے165رنز بناتے تو صورتحال کچھ اور ہوتی۔ انہوں نے کہا کہ فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی کو فٹ رہنے کے لئے کچھ آرام کی ضرورت ہے۔وہ تمام فارمیٹس میں مستقل طور پر کھیل رہا ہے۔ وہ ایک انسان ہے اور مجھے لگتا ہے کہ اس کا جسم کچھ تھکا ہوا ہے، لہٰذا پاکستان کو روٹیشن پالیسی اپنانا ہوگی کیونکہ ہمیشہ تمام میچوں میں تمام کھلاڑیوں کو کھیلنا ممکن نہیں ہے۔ انضمام نے کہا کہ شاداب خان کی گیند کے ساتھ کارکردگی کا کچھ عرصہ تک فائدہ نہیں ہوا لیکن وہ ایک بہترین کھلاڑی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے اپنی بیٹنگ کی وجہ سے کچھ میچ بھی جیتے۔