پاکستانی شہریت چھوڑنے والی خاتون سے متعلق عدالتی فیصلہ آگیا

280

پاکستانی شہریت چھوڑنےوالی خاتون کی دوبارہ پاکستانی شہریت لینےکی درخواست مسترد کر دی گئی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے قرار دیا ہے کہ درخواست گزار  ثمینہ نازکوبھارتی شہریت سرنڈرکرنےتک پاکستانی شہریت نہیں مل سکتی۔

جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے6صفحات پرمشتمل تفصیلی فیصلہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ امیگریشن حکام کاثمینہ نازکوپہلےبھارتی شہریت چھوڑنےکی ہدایت درست اقدام ہے، ثمینہ نازنے2004میں بھارتی شہری سےشادی کی، پاکستانی شہریت بھی سرنڈرکی۔

تفصیلی فیصلے کے مطابق ثمینہ نازکوپاکستانی شہریت سرنڈرکرنےپربھارتی شہریت کےکاغذات جاری کیےگئے، ثمینہ ناز 2018 میں وزٹ ویزے پر بچوں سمیت واپس پاکستان آئی، خاتون ثمینہ نازنےبچوں کوپاکستان میں غیرملکی طالبعلم کادرجہ ملنےپردوبارہ  شہریت کی درخواست دی تاہم ثمینہ نازاوران کےبچےنئےشہری کےطورپرہی پاکستانی شہریت لےسکتےہیں۔