ٹرسٹ و ادارہ جات کی رجسٹریشن کو آسان بنایا جائے، حسین محنتی

21

کراچی (نمائندہ جسارت) جماعت اسلامی سندھ کے امیر و سابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے حکومت سندھ کی جانب سے ٹرسٹ و ادارہ جات کی رجسٹریشن منسوخی کی اخبارات کے ذریعے پبلک نوٹس اور منتظمین پر جرمانے و قید وبند کی دھمکیوں پر مشتمل اشتہار پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ اداروں کی رجسٹریشن کو کرپشن کا ذریعہ بنانے کے بجائے اسے آسان بنایا جائے۔ انہوں نے ایک بیان میں کہا کہ یہ ٹرسٹ و ادارے تعلیم و صحت کے میدان میں عوام کی فلاح و بہبود کے لیے بہترین خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ حکومت ان کی سرپرستی اور اپنے اداروں کی درستگی کے بجائے جو حقیقی معنوں میں عوام و ملک کی خدمت سرانجام دے رہے ہیں ان کا راستہ روک رہی ہے جو کہ قابل تشویش بات ہے۔ اس لیے ہمارا مطالبہ ہے کہ حکومت سندھ اس حوالے سے جارحانہ اقدامات اور کرپشن کا بازار گرم کرنے کے بجائے مساجد مدارس رفاہی و فلاحی اداروں کی رجسٹریشن کے قواعد و ضوابط کو آسان بنائے۔ جو ادارے عوام کے تعاون سے چل رہے ہیں ان کا بہتر استعمال اور آڈٹ بھی ہوتا ہے مگر جو ادارے حکومت کے تحت چل رہے ہیں۔ سب سے زیادہ کرپشن و بربادی انہی اداروں میں ہے۔ اس لیے حکومت سب سے پہلے اپنے گھر کو درست کرے۔ عوام کی فلاح و بہبودکے لیے کام کرنے والے اداروں کو پریشان یا راستہ روکنے سے عوام کی خدمت کا کام متاثر ہوگا۔ حکومت سندھ ہوش کے ناخن لے ایسے اقدامات سے گریز کرے جس کی وجہ سے عوام کی مشکلات میں مزید اضافہ ہو۔