پنجاب حکومت کا سولر سسٹم پر بننے والی بجلی خریدنے کا فیصلہ

65

 

 

لاہور (نمائندہ جسارت) لوڈ شیڈنگ اور ٹرپنگ جیسے واقعات سے چھٹکارا اور قومی گرڈ سسٹم پر بوجھ کم کرنے کے لیے پنجاب حکومت نے بڑا فیصلہ کر لیا۔ لاہو سمیت صوبہ بھر سے سولر سسٹم پر بننے والی بجلی خریدی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق بجلی صارفین تک سستی بجلی کی بلا تعطل فراہمی کے لیے حکومت پنجاب نئی منصوبہ بندی کرنے جارہی ہے جس کے تحت شہر سمیت صوبہ بھر سے سولر سسٹم پر بننے والی بجلی خریدی جائے گی۔ حکومت گرڈ کمپنی بنا کر بجلی پہنچانے اور بلنگ کی ذمے داری مذکورہ کمپنی پر ہوگی۔ محکمہ توانائی پنجاب کی جانب سے حکومت کو دی جانے والے بریفنگ میں کہا گیا ہے کہ سولر سسٹم سے آنے والی بجلی سے قومی گرڈ سسٹم پر بوجھ کم پڑے گاجبکہ لوڈ شیڈنگ اور ٹرپنگ جیسے واقعات سے چھٹکارا ملے گااس
حوالے سے اب محکمہ توانائی پنجاب نے سمری ایوان وزیر اعلی کو ارسال کردی ہے اور محکمہ توانائی نے حکومت سے 10 کروڑ روپے کے فنڈ بھی مانگ لیے ہیں۔پنجاب حکومت، کے پی کے اور سندھ کی طرز پر اپنی گرڈ کمپنی بنائے گی ۔ دستاویزات کے مطابق حکومت بحریہ ٹاون سے 100 میگاواٹ، برج کیپٹل ،مسگ 40 میگا واٹ ،اینگورو 250 میگا واٹ اور سیاچین سولر پراجیکٹ سے 100 میگاواٹ بجلی خریدے گی۔ نجی شعبے 1300 میگاواٹ بجلی پیدا کررہے ہیں جبکہ بجلی خریدنے کے بعد ٹرانسمیشن اور ڈسٹریبیوشن سسٹم کے تحت گرڈ کمپنی بنے گی۔