کورونا سے نمٹنے میں حکومت بے حسی کا مظاہرہ کررہی ہے ،جاوید قصوری

70

لاہور (نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ کورونا کی صورت حال دن بدن گمبھیر ہوتی چلی جارہی ہے۔ لوگ مررہے ہیںجبکہ حکومت اس سنگین صورت حال میں بھی بے حسی کا مظاہرہ کررہی ہے۔ کورونا ویکسین جو دنیا بھر میں 1500 روپے میں دستیاب ہے پاکستان میں اس کی قیمت 8 ہزار 4 سو روپے ہے۔ کورونا وبا کی صورت پر حال پر قابو پانے کے لیے ویکسین مفت فراہم کی جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مختلف پروگرامات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایس او پیز پر عملدر آمد کو یقینی بنانے کے لیے سخت اقدامات کرنے کی ضرورت ہے مگر اس کو آڑ بناکر لوگوں کو پریشان کرنا، کاروبار زبردستی بند کروانا درست نہیں۔ اس سے عوام میں حکمرانوں کیخلاف نفرت میں اضافہ ہوگا۔ حکومت دانش مندی کا مظاہرہ کرتے ہوئے عوام کو ریلیف فراہم کرے، کورونا کا خوف ختم ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کے ناعاقبت اندیش فیصلوں کی بدولت عوام کے مسائل میں کمی کے بجائے اضافہ ہوگیا ہے۔ تحریک انصاف کی تبدیلی سے نجات حاصل کرنا سب سے بڑا چیلنج بن چکا ہے۔ 22 کروڑ عوام تینوں پارٹیوں کی حقیقت جان چکے ہیں۔ ان سے خیر کی توقع نہیں کی جاسکتی۔ محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ اسپتالوں میں کورونا ویکسین غائب ہونے کی اطلاعات بھی تشویشنا ک ہیں۔ بااثر افراد کے گھروں میں ویکسینیشن کی خبریں میڈیا میں آچکی ہیں۔ ایک طرف لاہور سمیت پنجاب بھر میں کورونا کے مریضوں سے نجی اسپتال وینٹی لیٹر اور آکسیجن لگانے کے ایک دن کے لاکھوں روپے لے رہے ہیں، لوگوں کو لاکھوں روپے دے کر بھی اپنے پیاروں کی میتیں وصول کررہے ہیں۔ کورونا وبا نجی اسپتالوں کے لیے کمائی کا بڑا ذریعہ بن چکی ہے جبکہ دوسری طرف حکومت اور وزارت صحت اس ضمن میں دونوں خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں۔