اشیائے خورونوش کی قیمتوں میں 50 فیصد تک کمی کی جائے

53

فیصل آباد(وقائع نگار خصوصی)جماعت اسلامی پی پی 114کے امیر میاں عبدالستار بیگا ، جنرل سیکرٹری چودھری نویداسلم، چاند زیب خاں، رانانعیم اکرم، حاجی محمدحنیف، راناوسیم احمد ایڈووکیٹ اوردیگرنے کہا ہے کہ ملک میں اتنی مہنگائی بڑھ گئی ہے کہ سانس لینا بھی مشکل ہوگیا ہے لیکن وزیراعظم کو عوام کی کوئی پروا نہیں ہے،وہ جس چیز کی مہنگائی کا نوٹس لیتے ہیں اس کی قیمت دگنی ہوجاتی ہے، رمضان المبارک کا مبارک مہینہ آرہا ہے اور اشیائے خورونوش کی قیمتیں آسمان سے باتیں کررہی ہیں،جماعت اسلامی کا مطالبہ ہے کہ اشیائے خورونوش کی قیمتوں میں 50 فیصد تک کمی کی جائے۔ پاکستان اسلام کے نام پر بنا ہے مگر 73 سال گزر جانے کے باوجود یہاں ایک دن کے لیے بھی اسلام نافذ نہیں ہوا۔ جس انگریز سے ہم نے آزادی حاصل کی اسی انگریز کا نظام و شاگردوں کو ہم پر مسلط کردیا گیا ہے۔ تمام مسائل سے نجات اور کامیابی کا راستہ قرآن وسنت کا نظام ہے جس کے لیے جماعت اسلامی روزاول سے جدوجہد کر رہی ہے۔میاںعبدالستار بیگا نے کہاکہ حکومت کے وعدے، دعوے، اعلانات قوم کے ساتھ مذاق ہیں۔ وزیراعظم کا آئندہ ڈھائی سال میں کارکردگی کی بات کرنا دراصل اپنی ناکامی کا اعتراف ہے۔ حکومت کب تک عوام کو سبز باغ دکھائے گی۔کب تک لوگ گھر کا سامان بیچنے پر مجبور رہیں گے۔ مدینے جیسی ریاست کا دعویٰ کرنے والوں نے عوام کا غمخوار بننے کے بجائے مصیبتوں کا پہاڑ ان کے کندھوں پر لاد دیا۔ اسلامی نظام نافذ ہوتا تو بہت کم عرصے میں سودی قرضے لینے کے بجائے ہمارا ملک معاشی حوالے سے خود مختار ہوتا۔ اللہ کا دین مکمل ضابطہ حیات ہے جس میں تمام مسائل کا حل موجود ہے۔ جماعت اسلامی چاہتی ہے کہ لوگ دو رنگی چھوڑ کر یک رنگی اختیار کریں اور اللہ کے نظام کو نافذ کرنے کے لیے جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔ چودھری نویداسلم نے کہاکہ جماعت اسلامی نظریاتی سیاست کر رہی ہے یہ واحد جماعت ہے جو فرد کے انفرادی معاملات اور اس کی تربیت پر زور دیتی ہے اور چاہتی ہے کہ وہ اچھا مسلمان بن کر دنیا و آخرت میں کامیاب قرار پائے۔ جماعت اسلامی چاہتی ہے کہ اس کا اخلاق و کردار اور معاملات اللہ کے نظام کے تابع کرتے ہوئے حقیقی تبدیلی برپا کی جائے۔ فرد کی تبدیلی تک معاشرے کی تبدیلی ممکن نہیں۔ ہم لوگوں کو افراد کی طرف نہیں بلکہ رجوع الی اللہ کی طرف دعوت دیتے ہیں۔