اپوزیشن کی اندرونی جنگ حکومت کے لیے آب حیات کا کام کرگئی، لیاقت بلوچ

70

لاہور(نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی و سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ اپوزیشن اتحاد میں سینیٹ میںہو نے والا فساد قومی اسمبلی اور پنجاب اسمبلی کو بھی اپنی لپیٹ میں لے گا ۔ اپوزیشن جماعتوں کی مفاداتی جنگ نااہل ، ناکام اور عوام دشمن حکومت کے لیے آب حیات کا کام کر گئی ہے ۔ حکومتی اتحاد ملک چلانے ، عوام کو ریلیف دینے میں ناکام ہے ۔ پی پی ، مسلم لیگ ن کے سامنے قومی اہم تر مسائل کی کوئی ترجیح نہیں ،اسی وجہ سے سیاسی ،جمہوری ،پارلیمانی نظام بے وزن اور غیر متعلق ہوگیاہے ۔ آئین ،سیاسی، جمہوری، پارلیمانی عمل کی حفاظت کے لیے قومی جماعتوں کو قومی ڈائیلاگ کرناہوں گے ۔ بااختیار بلدیاتی نظام بااعتماد متفقہ قومی انتخابی اصلاحات کے ساتھ شفاف و غیر جانبدارانہ انتخابی نظام تمام جمہوری قوتوں کی گردن پر فرض اور قرض ہے ۔ صرف اقتدار کے حصول کے لیے بے اصولی کے فلسفے کو ترک کرنا ہوگا۔ مستحکم اور خوشحال پاکستان قومی سلامتی کے تحفظ کے لیے ضروری ہے ۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ عمران خان سرکار اقتصادی نظام کو سنبھالنے کے بجائے مزید تباہی کی طرف دھکیل رہی ہے ۔ آئی ایم ایف کی غلامی اور اس دبائو میں حکومتی ہر اقدام عوام کے لیے وبال جان بن گیاہے ۔ حکومت اسٹیٹ بینک کی نام نہاد آزادی کے نام پر درپردہ آئی ایم ایف کی غلامی کا آرڈی نینس واپس لے اور پارلیمنٹ میں کھلی بحث کے ساتھ معاملات کا فیصلہ کیا جائے ۔ آج جماعت اسلامی کی گول میز کانفرنس اسٹیٹ بینک ایشو پر قومی لائحہ عمل دے گی ۔ مسئلہ کشمیر کو حکومت ناقابل تلافی نقصان پہنچا رہی ہے ، دو قدم پسپائی اختیار کر کے اشک شوئی کے لیے بیان بازی کر کے حکومت آزادی کی جدوجہد سے بے وفائی کے راستے پر گامزن ہے ۔ مسئلہ کشمیر پر حکومت بلاتاخیر متفقہ قومی کشمیر پالیسی بنائے اور اس پر عملدرآمد کے لیے مسئلہ کشمیر پر وزیر مملکت مقرر کیا جائے۔