بھارت کی 4 ریاستوں میں انتخابات کا تیسرا مر حلہ

117
نئی دہلی: مغربی بنگال، تمل ناڈو اور آسام میں ریاستی انتخابات کے موقع پر شہری قطار میں کھڑے ہیں‘ کورونا کے مریض اپنے مقررہ اوقات میں ووٹ ڈالنے آ رہے ہیں

نئی دہلی (انٹرنیشنل دیسک) بھارت میں اسمبلی کے انتخابات کے تیسرے مرحلے میں تمل ناڈو، کیرالا، پڈو چیری اور آسام کے شہریوں نے ووٹ ڈالے۔ 4ریاستوں میں انتخابات کے تیسرے مرحلے میں 20 کروڑ افراد کو ووٹ ڈالنے کا اہل قرار دیا گیا،جب کہ 750 سے بھی زیادہ نشستوں کے لیے ہزاروں امیدوار میدان میں تھے۔ تمل ناڈو کی 234 نشستوں، کیرالا کی 140 اور پڈوچیری کی 30 سیٹوں کے لیے ایک ہی دن مقرر کیا گیا تھا۔ مغربی بنگال میں 8مرحلوں میں ہونے والے انتخابات اپریل کے آخر میں ختم ہوں گے۔ اس بار بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی اور بی جے پی کے درمیان سخت مقابلہ ہے۔ وہاں کانگریس کے ساتھ اتحاد کر کے کمیونسٹ جماعتوں کا محاذ بھی میدان میں ہے۔ تاہم مبصرین کے مطابق وقت کے ساتھ ہندو قوم پرست جماعت بی جے پی نے اپنی گرفت مضبوط کر لی ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کے تمام وزرا مغربی بنگال میں بی جے پی کے لیے پوری شدت سے انتخابی مہم چلا رہے ہیں۔ ادھر شمال مشرقی ریاست آسام میں انتخابات کا تیسرا اور آخری مرحلہ تھا، جہاں حکمراں بھارتیہ جنتا پارٹی اور کانگریس اتحاد کے درمیان سخت مقابلہ رہا۔ مبصرین کا کہناہے کہ بی جے پی کو حکومت مخالف رجحان کا سامنا ہے اور اس کے ہدف انتہائی مشکل ہوگیا ہے۔ مودی کی ناکام پالیسیوں کے باعث عوام کا ایک بڑا طبقہ خاموش ہے اور ظاہر ہے اس سے کانگریس کو فائدہ پہنچے گا۔