فلسطینیوں کے ہاتھوں اسرائیلی فوج کی چوکی نذر آتش

106

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی مظالم سے تنگ آئے فلسطینی نوجوانوں نے شعفاط کیمپ کے قریب اسرائیلی فوج کی ایک چوکی پر پیٹرول بم پھینک کر اسے نذر آتش کردیا۔ بیت المقدس میں مقامی ذرائع نے بتایا کہ اسرائیلی فوجیوں اور فلسطینیوں کے درمیان شعفاط کیمپ کے قریب جھڑپیں ہوئیں۔ قابض فوج نے فلسطینیوں پر دھاتی گولیاں چلانے کے ساتھ آنسوگیس کی شیلنگ کی اور براہِ راست آتشیں گولیاں چلائیں، جب کہ فلسطینیوں نے قابض فوج پر سنگ باری کی اور پیٹرول بم پھینکے۔ پیٹرول بم حملے میں اسرائیلی فوج کا ایک کنٹرول ٹاور نذرآتش ہوگیا۔ خیال رہے کہ بیت المقدس میں شعفاط پناہ گزین کیمپ قابض فوج اور فلسطینیوں کے درمیان مسلسل جھڑپوں کا مرکز رہتا ہے۔ قابض فوج اس علاقے میں روزانہ کی بنیاد پر تلاشی کی کارروائیوں کی آڑ میں بڑے پیمانے پر لوٹ ماراور توڑپھوڑ کرتی ہے، جس کے خلاف فلسطینی مظاہرے کرتے ہوئے سڑکوں پر نکل آتے ہیں۔ دوسری جانب قابض صہیونی فوج اور پولیس کی جانب سے فلسطین کے مغربی کنارے کے تاریخی شہرالخلیل کی تاریخی جامع مسجد میں نمازوں کی ادائیگی اور اذان پر پابندیوں کا ناروا اور غیرقانونی سلسلہ بدستور جاری ہے۔ رپورٹس کے مطابق مارچ 2021ء میں مسجد ابراہیمی کے دروبام 59 بار اذان سے محروم رہے۔ الخلیل کے محکمہ اوقاف نے اپنے بیان میں بتایا کہ مسجد ابراہیمی میں اذان اور نماز پرصہیونی پابندیوں میں غیر معمولی اضافہ سامنے آیا ہے۔