کسانوں کااحتجاج: بجٹ سیشن پر پارلیمنٹ کے گھیراؤ کی تیاریاں

153

نئی دہلی: زرعی قوانین کے خلاف ڈٹے کسانوں نے مودی حکومت کو ہلا کررکھ دیا جبکہ مظاہرین نے بجٹ سیشن کے دوران پارلیمنٹ کےگھیراؤ کی بھی تیاریاں کرلیں ہیں۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق  بھارتی کسانوں کے احتجاج کو 102 روز سے زائدہوگیے  ہیں اور مظاہرین نے ہریانہ، پنجاب اور راجستھان کی ہائی ویز بلا ک کر دیں جبکہ ہزاروں مظاہرین نے ہریانہ ایکسپریس وے بند کرکے اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا ہے اور خواتین کسان کالے کپڑے پہن کر ریلیوں میں شریک ہوئیں اور اجتجاج کیا۔

خیال رہے پنجاب سے 50 ہزار خواتین کسان وومن ڈے پر دلی پہنچیں گی اور بھارتی پنجاب میں بچے اور بڑے اپنے تحفظ کے لیے کرپان (چھوٹی تلوار/سکھوں کی مذہبی علامت) کے گر بھی سیکھ رہے ہیں جبکہ کسان رہنماؤں نے زرعی قوانین واپس نہ ہونے پر پارلیمنٹ کے گھیراؤ کا اعلان کررکھا ہے اور بھارتی پارلیمنٹ کا دوسرا بجٹ سیشن کل سے شروع ہورہا ہے۔

دوسری جانب کانگریس ہریانہ ریاست میں بی جے پی حکومت کے خلاف 10مارچ کو تحریک عدم اعتماد لا ئے گی جبکہ خواتین کے عالمی دن کی مناسبت سے ٹائم میگزین نے احتجاج میں شریک خواتین کسانوں کو سرورق میں جگہ دی ہے ، تاہم کسانوں کا پیغام تھا انہیں ڈرایا اور خریدا نہیں جا سکتا۔

واضح رہے کاشتکاروں نے دلی کی طرف جانے والی بڑی سڑکیں بلاک کر کے دھرنا دیا ہوا ہے  اور کل بجٹ سیشن کے دوران پارلیمنٹ کےگھیراؤ کی بھی تیاریاں مکمل کرلیں ہیں۔