بھارتی وزیر خارجہ کا دورۂ بنگلادیش‘ روہنگیا مہاجرین کو امید

123
ڈھاکا: بھارتی وزیر خارجہ سبرامنیم جے شنکر بنگلادیشی ہم منصب اے کے عبد المؤمن سے ملاقات کررہے ہیں

ڈھاکا (انٹرنیشنل ڈیسک) بین الاقوامی پانیوں میں پھنسے 81 روہنگیا مہاجرین کا مسئلہ حل کرنے کے علاوہ دیگر معاملات پر بات چیت کے لیے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے پہلے وزیر خارجہ سبرامنیم جے شنکر بنگلادیش پہنچ گئے، جہاں انہوں نے اپنے ہم منصب سے ملاقات کی اور پانی کی تقسیم، تجارت کے علاوہ سرحدی امور پر بات چیت کی۔ خبر رساں اداروں کے مطابق سمندر کی خطرناک لہروں سے بچ جانے والے روہنگیا پُرامید ہیں کہ ان کے محفوظ مستقبل سے متعلق کوئی پیش رفت ضرور سامنے آئے گی۔ بھارتی وزارت داخلہ کے ایک سینئر عہدے دار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ اس دورے کے دوران یقینا روہنگیا پناہ گزینوں کا مسئلہ بھی زیر بحث ہوگا۔ واضح رہے کہ گزشتہ ماہ بھارتی ساحلی محافظوں نے بنگلادیش سے آنے والے 81 روہنگیا پناہ گزینوں کو بچایا تھا جن کی کشتی 2 ہفتوں سے بحر احمر میں پھنسی ہوئی تھی اور پانی کی کمی کے باعث کشتی میں سوار 8 افراد پہلے ہی دم توڑ چکے تھے۔ ان پناہ گزینوں کا مستقبل تاحال غیر یقینی کا شکار ہے کیوں کہ اب تک بھارت نے اپنی سرزمین میں انہیں داخلے کی اجازت نہیں دی ہے۔ مودی حکومت چاہتی ہے کہ بنگلادیش انہیں واپس لے، تاہم بنگلادیش کے وزیر خارجہ اے کے عبد المومن نے گزشتہ ہفتے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا تھا کہ ان کی حکومت توقع کرتی ہے کہ روہنگیاؤں کا اصل ملک میانمر یا قریب ترین ملک بھارت ان 81 زندہ بچ جانے والوں کو قبول کرے۔ واضح رہے کہ 2017ء میں میانمر کی فوج کے کریک ڈاؤن کے بعد لاکھوں روہنگیا اپنے وطن سے فرار ہونے پر مجبور ہوگئے تھے۔