کراچی: لڑکے نے لڑکی کو گولی مار کر خودکشی کرلی، پولیس

101

کراچی: صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی کے علاقےصدر  میں  ایم اے جناح روڈ کے قریب واقعہ تاج کمپلیس انٹرسٹی بس اڈے  کے پاس پیش آیا ، جہاں  لڑکے نے لڑکی کو گولی  مار کر خودکشی کرلی  ہے۔

تفصیلات کے مطابق  کراچی کے علاقے ایم اے جناح روڈ پر تاج کمپلکس انٹرسٹی بس اڈے کے قریب فائرنگ سے ایک نوجوان جاں بحق جبکہ نوجوان لڑکی شدید زخمی ہوگئی جس کو جناح اسپتال منتقل کردیا گیا ہے ۔

پولیس کے مطابق  فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے نوجوان کی لاش سول جبکہ زخمی لڑکی کوجناح اسپتال منتقل کردیا گیاجہاں لڑکی کی حالت تشویشناک بنائی جاتی ہے۔

ایس ایچ او تھانہ بریگیڈ ماجد کورائی کا کہنا تھا کہ فائرنگ سے نوجوان کی شناخت 21 سالہ ملک شاہ زیب ولد ملک محمد شعیب اعوان اور زخمی لڑکی شناخت 23 سالہ تنزیلا عرف ایمان ولد بن یامین کے نام سے کرلی گئی ہے۔

پولیس کے مطابق فائرنگ سے خودکشی کرنے والے ملک شاہ زیب انٹرسٹی بس پر ملازمت کرتا تھا جبکہ زخمی لڑکی بھی انٹر سٹی بس سروس (کائنات ٹریول) کی ملازمہ اور بس ہوسٹس ہےجبکہ ہلاک نوجوان کا آبائی تعلق تحصیل کلرکلہارچکوال سے تھا اور زخمی لڑکی بہاولپور کی رہائشی ہے۔

ابتدائی تفتیش کے مطابق ہلاک نوجوان نے پہلے 9 ایم ایم پستول سے لڑکی پر فائرنگ کی اور پھر اس کے بعد خود کو گولی مار کر خود کشی کر لی ، لڑکے کو ایک گولی قریب سے سر پر جبکہ زخمی لڑکی کو ایگ گولی پیٹ اور 2 گولیاں ران پر لگیں ہیں ۔

تفتیشی پولیس ٹیم نے جائے وقوع سے 9 ایم ایم پستول ، گولیوں کے 4 خول اور کچھ زندہ راؤنڈ اپنی تحویل میں لے لیے ہیں جسے فرانزک ٹیسٹ کے لیے بھیجا جائے گا۔

دوسری جانب پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر واقعہ پسند نہ پسند کا معلوم ہوتا ہے اور فائرنگ کے واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کرلی گئی جس میں لڑکی کو سفید گاڑی کی طرف جاتے دیکھا جاسکتا ہے۔

سی سی ٹی وی فوٹیج میں  شاہ زیب رکشے سے اترکر چلتا ہوا آیا اور لڑکی کو گولیاں مار دیں جبکہ گولیاں لگتے ہی لڑکی زمین پر گرپڑی اور مقتول لڑکی کو گولیاں مارنے کے بعد کچھ لمحے کھڑا سوچتا رہا پھر ملزم نے کنپٹی پر گن رکھ کر گولی چلائی اور گر پڑا ، لڑکی زخمی حالت میں کسی کو فون ملاکر معاملہ بتاتی رہی ہے۔

واضح رہے فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے نوجوان کی لاش سول جبکہ زخمی لڑکی کوجناح اسپتال منتقل کردیا گیاجہاں لڑکی کی حالت تشویشناک بنائی گئی  ہے اور پولیس نے تفتیش شروع کردی ہے۔