سوشل میڈیا رولز: حکومت نے عدالت سے مزید وقت مانگ لیا

128

وفاقی حکومت نے سوشل میڈیا رولز میں ترمیم کیلئے عدالت سے ایک ماہ کا مزید وقت مانگ لیا، اسلام آباد ہائیکورٹ نے وفاقی حکومت کو 2 اپریل تک کی مہلت دے دی۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہرمن اللہ نے نئے سوشل میڈیا رولز کے خلاف درخواست پرسماعت کی، ڈپٹی اٹارنی جنرل طیب شاہ عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔

ڈپٹی اٹارنی جنرل طیب شاہ نے عدالت سے کہا کہ ہم پہلے تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کرنا چاہتے ہیں، کچھ لوگوں کی رائے لی گئی ہے تاہم دیگر فریقین کو بھی سنیں گے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے کہا کہ اٹارنی جنرل پاکستان 2 اپریل کو رپورٹ عدالت میں پیش کریں اور سوشل میڈیا رولز سے متعلق تمام درخواستیں 2 اپریل کو مقرر کی جائیں۔

عدالت نے کہا کہ رپورٹ دیکھ کر ہی سوشل میڈیا رولز کے خلاف درخواستوں پرفیصلہ دیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ سماعت میں اٹارنی جنرل نے استدعا کی تھی کہ کسی سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو بند کرنا مسئلے کا حل نہیں، اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد رپورٹ پیش کروں گا، عدالتی معاونت کیلئے وقت دیا جائے جس پر عدالت نے کہا کہ اسٹیک ہولڈرز کو بلا کر سننا مناسب تجویز ہے اور اٹارنی جنرل رپورٹ پیش کریں گے تو بہتر چیز سامنے آئے گی۔