ترکی کی سرمایہ کاری سے اسرائیل پر انحصار کم ہو گا، فلسطینی وزیر

170

فلسطینی وزیر اقتصادیات خالد الا اصیلی کا کہنا ہے کہ فلسطین مغربی کنارے میں ترکی کے انڈسٹریل زون کا خیر مقدم کرتا ہے، ترکی کی جانب سے فلسطین میں سرمایہ کاری سے اسرائیل پر انحصار کم ہو گا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق فلسطینی وزیر خالد الوصیلی نے کہا کہ صنعتی زون کو دو مراحل میں نافذ کیا جائے گا، پہلے مرحلے میں جرمنی کی جانب سے تقریبا 24 ملین یوروکی لاگت سے مالی اعانت کی جائیگی جس میں میں تمام بیرونی انفراسٹرکچر شامل ہے اور 2021 کے وسط تک مکمل ہونے کا امکان ہے۔

ترک فلسطین کی آزادی کے لئے ہر فورم پرآواز اٹھائے گا، صدر ایردوان

فلسطینی وزیر کا کہنا تھا کہ دوسرے مرحلے میں ترکی کی جانب سے کی جانے والی مالی اعانت  سے انڈسٹریل زون کے بنیادی ڈھانچے کو بہتر بنایا جائے گا، جس پر تقریباً 10 ملین ڈالر کی لاگت آئے گی، امید ہے کہ یہ انڈسٹریل زون جلد ہی تیار ہو جائے گا۔

انہوں نے مزید کہاکہ فلسطینی حکمت عملی کے نقطہ نظر سے اسرائیلی معیشت سے مرحلہ وار علیحدگی کے لیے انڈسٹریل زون  معاون ثابت ہوگا،، جینن میں  تیار کی جانے والی مصنوعات اسرائیل سے درآمد کردہ مصنوعات کا متبادل ہوں گی، جس کے بعدہمارا اسرائیل پر انحصار کم ہو جائے گا ۔

عثمانی دور زندہ ہو گا،بیت المقدس ہمارا ہے، ترکی صدر

فلسطینی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ جنین شہر میں 1100 ایکڑ رقبے پر  ترکی، امریکہ اور یورپی یونین کی جانب سے فراہم کردہ مالی اعانت سے قائم کیے جانے والے صنعتی علاقے کے اندر خوراک  اور ٹیکسائل  کارخانے لگائے جائینگے  علاوہ ازیں یہاں پر موٹر گاڑیوں کی اسمبلنگ  بھی کی جائیگی۔