کمر درد کیلئے سرجری کے علاوہ دیگر معالجے

261

کمر کا درد آج کل ایک عام بات ہوچکی ہے اور اس میں نوجوان سے لے کر بوڑھے تک اس کا شکار ہورہے ہیں۔ حتمی حل جو لوگوں کو سمجھ آتا ہے وہ ہے سرجری تاہم سرجری کے علاوہ کئی ایسے طریقے ہیں جس سے کمر کے درد کو ختم یا کم کیا جاسکتا ہے۔

ورزش

ورزش کمر کے دائمی درد کے علاج کی بنیاد ہے۔ یہ پہلا علاج ہے جس میں آپ کو اپنے معالج اور فزیشن کی رہنمائی میں کرنا چاہیے۔ تاہم ایک ہی طرح کی مشق ہر ایک کے لیے کام نہیں کرتی۔ مشقوں کو اپنی مخصوص علامات اور حالت کے مطابق اپنانا ہوگا۔ گھر میں ورزش کے معمول کو برقرار رکھنا بھی کامیاب علاج کا ایک بڑا حصہ ہے۔

جسمانی تھراپی میں شامل ہوسکتا ہے:

اپنی جسمانی وضع کو بہتر بنائیں

درد برداشت کرنے کی حد کی جانچ

کھینچاؤ اور لچکدار مشقیں

ایروبک مشقیں

مظبوط اور طاقتور بنانے کی مشقیں

ذہنی ورزش

کمر کا دائمی درد جسمانی اور جذباتی طور پر تناؤ کا باعث ہوتا ہے۔ مایوسی ، چڑچڑاپن ، افسردگی اور دیگر نفسیاتی پہلوؤں کو سنبھالنے کے لیے آپ کو ماہر نفسیات سے رجوع کرنا پڑسکتا ہے۔ یہ ماہر آپ کے دماغ کو درد پر توجہ دینے سے روکنے کے لئے مراقبہ ، یوگا اور دیگر علمی اور آرام دہ حکمت عملی اپنانے کی تجویز دے سکتا ہے۔

غذاء

کچھ غذا انتہائی سوزش کا باعث بنتی ہیں ، خاص طور پر ان میں ٹرانس چربی ، شکر اور پروسیس شدہ کھانے کی مقدار زیادہ ہوتی ہے۔ اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کریں کہ کون سی غذا آپ کی پیٹھ کے درد میں معاون ثابت ہوسکتی ہے اور آپ اسے کیسے تبدیل کرسکتے ہیں۔ صحت مند وزن کو برقرار رکھنے سے آپ کی ریڑھ کی ہڈی پر دباؤ کم کرکے کمر کے درد کو کم کرنے میں بھی مدد مل سکتی ہے۔

طرزِ زندگی

جب آپ کو کمر کا درد ہوتا ہے تو آپ کیلئے اپنی حدود اور نئی طرزِ زندگی کو اپنانا ضروری ہے۔ ہر جسمانی محنت والا کام کرتے وقت درمیان میں تھوڑا وقفہ لیں ، سازو سامان کیلئے ہر بار پیدل سفر کریں ، ان سرگرمیوں کو نوٹ کریں جو آپ کے درد کو اور بڑھاتی ہیں اور اگر ممکن ہو تو ان سے بچیں۔ اس سے نہ صرف یہ کہ آپ کی پیٹھ بہتر محسوس کرے گی بلکہ یہ موجود کمر کی حالت کو مزید بڑھنے سے روک سکتا ہے۔ طرز زندگی میں ایک اور اہم تبدیلی سگریٹ نوشی چھوڑنا ہے نکوٹین سائنسی طور درد کو بڑھانے کیلئے جانا جاتا ہے۔

انجیکشن

اعصاب کو آرام پہنچانے اور کمر کے درد کیلئے انجیکشن پر مبنی علاج دستیاب ہیں۔ جب درد کا منبع معلوم ہوتا ہے تب یہ استعمال کیے جاتے ہیں۔ انجیکشن ایک خاص مدت کے لئے درد کو روک سکتے ہیں یا کم کرسکتے ہیں لیکن یہ طویل المیعاد حل نہیں ہے۔

تھیراپیز

ایکیوپنکچر ، مساج ،  بائیوفیڈ بیک تھراپی ، لیزر تھراپی وغیرہ بھی ریڑھ کی ہڈی کے علاج کیلئے استعمال کیا جاتا ہے لیکن اس سے پہلے لازمی ہے کہ کسی ماہر ڈاکٹر سے رجوع کریں۔

ادویات

اینٹی سوزش والی دوائیں پٹھوں کے آرام اور پیٹھ کے درد کو کنٹرول کرنے میں استعمال ہوتی ہیں۔ تاہم زیادہ تر یہ دوائیں منفی اثرات کے ساتھ آتی ہیں اور طویل استعمال کے لئے نہیں ہوتیں۔