جرنیلوں کے اشاروں پر حکومتیں بنتی اور ٹوٹتی ہیں، سراج الحق

448
امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق منصورہ میں مرکزی تربیت گاہ کے شرکاء سے خطاب کررہے ہیں

لاہور(نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ ملک پر 37 برس جرنیلوں نے حکومت کی اور باقی کے سال ان کے اشاروں پر حکومتیں بنتی اور ٹوٹتی رہیں ۔ قوم کو سارے حقائق کا علم ہے اور اب وہ اس تماشے سے تنگ آچکے ہیں ۔ قوم کو حقیقی تبدیلی چاہیے ۔ضمنی انتخاب میں ’’دھند ‘‘کی وجہ سے نتائج مؤخر ہونے جیسے حربے گزشتہ 73 سال سے ملک میں استعمال ہورہے ہیں۔ انتخابی اصلاحات نہ ہوئیں تو عام انتخابات میں زیادہ ’’ دھند‘‘ پڑ سکتی ہے ۔ موجودہ حکمرانوں میں صلاحیت ہے نہ صالحیت ۔ سیاسی اسموگ کی وجہ سے قوم کے روگ دن بدن بڑھ رہے ہیں ۔ مغرب کے ایجنٹ قوم پر مسلط ہیں ۔ حکومت کی ناکام پالیسیوں کی وجہ سے پڑھا لکھا نوجوان ، کسان ، مزدور سمیت ہرطبقہ فکر کے لوگ خوار ہو گئے ۔ ڈھائی کروڑ بچے اسکولوں سے باہر ہیں ۔ ملک کا مستقبل گندگی کے ڈھیروں میں روٹی کے ٹکڑے تلاش کرتا پھر رہاہے ۔ جماعت اسلامی ملک کا مستقبل ہے ۔ وہ وقت جلد آنے والا ہے جب انتخابات میں پیسے کی بجائے کریکٹر کو دیکھا جائے گا ۔قوم کو یقین دلاتاہوں کہ ملک کے مسائل کا حل اسلامی انقلاب میں ہے ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے منصورہ میں جاری کارکنان کی تربیتی ورکشاپ سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ مرکزی سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف بھی اس موقع پر موجود تھے ۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ سیاسی جماعتوں نے اگر آپس میں انتخابی اصلاحات کے لیے مذاکرات کاآغاز نہ کیا تو آئندہ عام انتخابات میں کس طرح کے حالات ہوں گے اس کا اندازہ 4 حلقوں میں ضمنی انتخاب سے لگایا جاسکتا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ ملک پر مسلط حکمران طبقہ استعماری طاقتوں کا آلہ کارہے ۔سابق اور موجودہ حکمرانوں نے عوام کے مسائل حل کرنے کے بجائے ان میں بے پناہ اضافہ کیا۔ پی ٹی آئی، جو تبدیلی کے نام پر آئی تھی ، نے گزشتہ 1000 دن میں ایک سیکٹر میں بھی بہتری کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھایا ۔ ملک میں گڈ گورننس کا نام و نشان تک نہیں ۔ ہر معاملے میں میرٹ کو یکسر نظر انداز کیا جاتاہے ۔ ملک میں لاکھوں بچے فیکٹریوں ، ہوٹلوں میں مزدوری کر رہے ہیں ۔ تعلیم کا شعبہ تباہی کے دہانے پر ہے ۔ باہر سے درآمد شدہ لوگ آئی ایم ایف کے اشاروں پر ملک میں پالیسیاں بنارہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ قوم کی گردنوں پر مسلط ظالم اشرافیہ نے ملک کے جغرافیے اور نظریے سے غداری کی ۔ ان لوگوں کو ہتھکڑیاں پہنا کر جیلوں میں بند کرناچاہیے ۔ انہوں نے کہاکہ عوام نے جرنیلوں اور تینوں سیاسی پارٹیوں کے ادوار دیکھ لیے ۔ پی ٹی آئی کی حکومت سب سے زیادہ نااہل ثابت ہوئی ہے۔ تبدیلی کے دعوے کرنے والے اب کسی کو منہ دکھانے کے قابل نہیں ۔ایک سوال کے جواب میں امیر جماعت نے کہاکہ پی پی ، نون لیگ اور پی ٹی آئی کی سیاست کا مقصد عوامی مسائل کا حل نہیں ۔ یہ پارٹیاں اپنے مقاصد کے حصول کے لیے قوم کو مسلسل بے وقوف بنارہی ہیں ۔ جماعت اسلامی نے پی ٹی آئی اور پی ڈی ایم کی سیاست سے اسی بنا پر کنارہ کشی کی ۔ ہم اسلامی انقلاب کے داعی ہیں ۔ ایک اور سوال کے جواب میں امیر جماعت نے کہاکہ پی ٹی آئی حکومت میں مافیاز کا راج ہے ۔ مہنگائی کی اصل وجہ مافیاز کا کردار ہے ۔ امیر جماعت نے کہاکہ قرآن و سنت کا نظام ہی پاکستان کی ترقی کا ضامن ہے ۔