سینیٹ انتخابات: وفاقی وزیر کے منظورکاغذات ٹریبونل میں چیلنج

72

اسلام آباد: وفاقی وزیر فیصل واوڈا کے سینیٹ الیکشن کیلئے کاغذات نامزدگی کی منظوری کیخلاف دائر اپیل کی سماعت میں الیکشن ٹریبونل نے الیکشن کمیشن اور فیصل واوڈا کو نوٹس جاری کردیے ہیں جبکہ قادر خان مندوخیل نے فیصل واوڈا کو نااہل قرار دینے کی درخواست دائر کی تھی۔

تفصیلات کے مطابق  سینیٹ الیکشن کیلیے فیصل واوڈا کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے خلاف پیپلز پارٹی کے رہنما قادرخان مندوخیل نے اپیل دائر کی ہے جس پر الیکشن ٹریبونل کی جانب سے الیکشن کمیشن اور فیصل واوڈا کو نوٹس جاری کیے گئے  ہیں جبکہ ٹریبونل نے نوٹس میں فریقین سے (کل) منگل کو جواب طلب کیا ہے۔

درخواست گزار قادر مندوخیل کے وکیل رشید اے رضوی نے عدالت میں دلائل دیے ہیں کہ وفاقی وزیر کی دہری شہریت ہے جس سے متعلق دستاویزات ٹریبونل میں پیش کیے ہیں۔

جسٹس آغا فیصل نے سماعت کے دوران استفسار کیا کہ فیصل واوڈا کی جانب سے کوئی آیا ہے؟ اس پر فیصل واوڈا کے وکیل حسنین چوہان پیش ہوئے اور بتایا کہ فی الحال مجھے کیس نہیں دیا گیا ہے۔

دوسری جانب قادر خان مندوخیل کا کہنا تھا کہ فیصل واوڈا نے امریکی شہریت سے متعلق حقائق چھپائے ہیں  اور ریٹرننگ افسر کے سامنے اعتراضات دائر کیے تھے مگر انہوں نے سننے سے انکار کر دیا۔

خیال رہے قادرخان مندوخیل نے عدالت سے اپیل کی کہ فیصل واوڈا کو سینیٹ الیکشن کیلیے نااہل قرار دیا جائے اور اس پر الیکشن ٹریبونل نےالیکشن کمیشن اور فیصل واوڈا دونوں کو نوٹسز جاری کردیے ہیں۔

واضح رہے  الیکشن ٹربیونل نے فریقین سے کل تک جواب طلب کرلیا ہے اور وفاقی وزیر فیصل واوڈا کو پیش ہوکر وضاحت دینے کا حکم بھی دیا۔

یاد رہے قادر خان مندوخیل نے فیصل واوڈا کو نااہل قرار دینے کی درخواست دائر کی تھی جبکہ  فیصل واوڈا سندھ سے سینیٹ کی جنرل نشست پر امیدوار ہیں جس کےلیے 18 فروری کو پی ٹی آئی امیدوار کے کاغذات نامزدگی منظور کیے گیے تھے۔

آر او کے سامنے دہری شہریت کے حوالے سے وفاقی وزیر نے جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ میں نے دہری شہریت چھوڑ دی ہے اور اس حوالے سے کاغذات الیکشن کمیشن میں پہلے ہی جمع کرا چکا ہوں جس پر ریٹرننگ افسر نے فیصل واوڈا کے کاغذات کو درست قرار دیتے ہوئے اعتراضات کو مسترد کردیا تھا۔