جیکب آباد میں 1800خواتین کو شناختی کار ڈ کا اجراء نہیں ہوا، الیکشن کمشنر

13

جیکب آباد (نمائندہ جسارت) جیکب آباد میں ووٹرز ایجوکیشن کمیٹی کا اجلاس، 1800 خواتین کو شناختی کارڈ کا اجرا نہ ہونے پر افسوس کا اظہار، گڑھی خیرو میں نہ نادرا کا دفتر ہے نہ ہی شناختی کارڈ بنوانے کے لیے وین دی جاتی ہے۔ 2008ء میں گڑھی خیرو سے نادار عملہ اغوا ہوا، سیکورٹی کی وجہ سے ایم آر وی نہیں دی جاسکتی، بالا حکام سے رجوع کیا جائے، اجلاس میں نادرا کے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ کا مشورہ۔ جیکب آباد کے الیکشن آفس میں ضلعی ووٹرز ایجوکیشن کمیٹی کا اجلاس ضلعی الیکشن کمشنر زاہد حسین بھٹو کی صدارت میں ہوا۔ اجلاس میں ندیم بہرانی نے بتایا کہ ضلع میں 1800خواتین کی فہرست بنائی ہے جنہیں شناختی کار ڈ کا اجراء نہیں ہوا،ایسے انکشاف پراجلاس میںحیرت اور افسوس کا اظہار کیا گیا، ٹھل میںنادرا عملہ خواتین کے شناختی کارڈ کی رجسٹریشن میں تعاون نہیں کرتا، گڑھی خیرو میں نادرا دفتر نہیں ہے، جہاں 500سے زائد خواتین کے شناختی کارڈ نہیں بنے، اس حوالے سے نہ ہی نادرا کی جانب سے ایم آر وی کی سہولت فراہم کی جا رہی ہے جس پر نادرا کے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ ضیاء الدین سومرو نے بتایا کہ 2008ء میں گڑھی خیرو سے نادرا عملہ اغوا ہوا، سیکورٹی کی وجہ سے دشواری ہے بالا حکام سے رابطہ کیا جائے ،محکمہ تعلیم کے افسر محمد ایوب بروہی کا کہنا تھا کہ 2008ء اور 2021ء میں امن و امان کی صورتحال مختلف ہے، اب ایسی کوئی صورتحال نہیں ہے، گڑھی خیرو میںنادار کی ذمے داری ہے، لوگوں کو شناختی کارڈ کے اجراء کے لیے سہولت فراہم کی جائے جبکہ محمدجان نے بتایا کہ گڑھی خیرو کی خواتین کو جیکب آباد آنا مشکل ہے۔ انہوں نے بتایا کہ نادرا عملہ خواتین کو مفت شناختی کارڈ کے اجراء کے بجائے انہیں اسمارٹ کارڈ بنوانے کے لیے دبائو ڈال رہا ہے، جو قابل افسوس ہے۔ اجلاس میں گرلز کالج میں خواتین کے شناختی کارڈ کے اجراء کے حوالے سے آگاہی پروگرام منعقد کیا جائیگا۔