فرانس: حجاب پر مکمل پابندی کا قانون متعارف

272

فرانسیسی دائیں بازو پارٹی کی رہنما میرین لی پین نے تمام عوامی مقامات پر مسلم ہیڈ سکارف پر پابندی کا قانون متعارف کروایا ہے جس پر ووٹنگ کی جائے گی۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق توقع کی جاتی ہے یہ تحریک غیر آئینی شمار ہوگی تاہم یہ سیاست دانوں کے لئے انتخابی مہم کا حصہ ہے جو ملک کے 2022 میں ہونے والے صدارتی انتخابات کے حوالے سے اہم ہےٓ۔

ایک پریس کانفرنس میں محترمہ لی پین نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ انہیں یقین ہے کہ حجاب ایک انتہا پسند لباس کی علامت ہے لہذا انہوں نے اسلام پسندانہ نظریات پر پابندی عائد کرنے کا قانون دیا ہے اور اسے غاصب قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ محترمہ لی پین دو بار فرانسیسی صدر کے عہدے کے لئے انتخابات میں حصہ لے چکی ہیں اور انہوں نے اپنے والد سے فرانس کی سرکردہ دائیں بازو کی جماعت سنبھالی ہے۔ 2017 کے دوران وہ ایمانوئل میکرون سے واضح فرق سے ہار گئیں تھیں۔