ریاض: پہلے ‘ڈرائیو ان سنیما’ کا آغاز

171

ریاض: سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں پہلا ‘ڈرائیو ان سینما’ کا آغاز کردیا گیا ہے جس میں شائقین اپنی گاڑیوں میں بیٹھ کر فلم سے محظوظ ہو سکیں گے۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق  ریاض میں سعودی عرب کے مقامی سینما گھروں کے ایک گروپ ایم یو وی آئی نے ایک ڈرائیو اِن تھیٹر کھولا ہے جبکہ مذکورہ کمپنی کا دعویٰ ہےکہ سال 2018 میں سینما گھروں پر ملک گیر پابندی ختم ہونے کے بعد یہ پہلا سعودی عرب کا پہلا ڈرائیو ان سینما ہے۔

منتظمین کے مطابق کورونا ایس او پیز کے تحت سماجی فاصلے کو مدنظر رکھتے ہوئے اس سینما میں 150 گاڑیوں کی گنجائش موجود ہے جبکہ کورونا وائرس کے خطرات سے نمٹنے کے لیے ڈرائیو ان سینما میں نہ صرف تمام آنے والے شائقین کا ٹمپریچر چیک کیا جائے گا بلکہ ان کیلئے فیس ماسک لگانا بھی لازمی ہوگا۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق ایم یو وی آئی سینماز اپنے ملازمین اور شائقین دونوں کے لیے محفوظ ماحول کو یقینی بنانے کی خاطر تمام احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کر رہا ہے۔

ایم یو وی آئی کے مارکیٹنگ ڈائریکڑ محمد مرزا کا کہنا ہے  کہ یہ ‘پاپ اپ سینما’ کب تک کھلے رہیں گے، اس حوالے سے تاحال کوئی فیصلہ نہیں ہوا جبکہ عوام کی جانب سے ابتدائی ردعمل سے پتہ چلتا ہے کہ ڈرائیو ان سینما کا آئیڈیا مملکت میں ایسے ہی مشہور ہوگا جیسے مشرق وسطیٰ، دبئی اور بیروت کے دیگر حصوں میں ہو رہا ہے کیونکہ یہ شائقین کو کورونا وائرس سے خود کو بچاتے ہوئے بڑی اسکرین پر فلمیں دیکھنے کا بہترین ذریعہ ہے۔

محمد مرزا نے یہ انکشاف کیا ہےکہ ایم یو وی آئی اس سال سعودی عرب میں 15 نئے سینما گھر کھولنے کا ارادہ رکھتی ہے جس میں 150 سے زیادہ اسکرینز شامل کی جائیں گی اور ہم اپنے عوام اور شائقین کو ایسے بہت سے خوشی کے لمحات پیدا کرنے کے لیے طرح طرح کے تجربات کرتے رہیں گے۔

دوسری جانب  ریاض کی رہائشی عروہ النومر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ یہ بہت عمدہ لگتا ہے یہ بالکل ویسا ہے جیسے ٹی وی اور فلموں میں دکھایا جاتا تھا جبکہ کورونا وائرس جیسے وبائی مرض کے دوران یہ فلمیں دیکھنے کا محفوظ طریقہ ہے۔