کراچی دشمنی ، آئی ایم ایف کی غلامی پر اپوزیشن و حکمران ایک ہیں ، حافظ نعیم

185
امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کراچی حقوق مہم میں کریم آباد چورنگی پر دھرنے سے خطاب کررہے ہیں

 

کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ کراچی دشمنی ، آئی ایم ایف کی غلامی ، ایف اے ٹی ایف کے معاملے پراپوزیشن اور حکمران جماعتیں ایک پیج پر ہیں ، صرف جماعت اسلامی ہی ہے جو عوام کو اس کے بنیادی حقوق دلاسکتی ہے ، کراچی اپنی اصل شکل کی طرف لوٹے گا ،30جنوری کو شہر بھرمیں 50مقامات پر احتجاجی دھرے دیے جائیں گے اور آئندہ کے لائحہ عمل کا
اعلان کیا جائے گا،کراچی بد ترین صورتحال بھی پورے ملک کی معیشت چلارہا ہے ،کراچی کو بھی اس کا حق دیا جائے ، کراچی دشمنی پیپلزپارٹی کی خمیر میں موجود ہے ، پیپلزپارٹی کراچی سے لینا جانتی ہے لیکن کچھ دینا نہیں جانتی ،ایم کیو ایم اور اس کی دھڑے بتائیں کہ نعمت اللہ خان کے بعد کراچی میں ٹرانسپورٹ کا نظام کیوں برقرار نہیں رہ سکا؟،K4 کا منصوبہ کیوں مکمل نہیں کیا گیا؟ ، نعمت اللہ خان کے بنائے گئے 8کروڑ کے بجٹ کے منصوبے 40 کروڑ تک کیسے پہنچ گئے ؟ بد قسمتی یہ ہے کہ 15 سال قبل K4 کی منظوری دی اور آج15 سال بعد پھر سے K4 کی منظوری دی جا رہی ہے، حکمران بتائیں کہK4 منصوبے پر کتنے رقم خرچ کی گء ؟، ایم کیو ایم بتائے کہ کراچی میں پارکس اور کھیلوں کے میدانوں پر قبضے کیسے ہوئے؟، چیف جسٹس آف پاکستان عوام پر ظلم کرنے والوں کے خلاف کارروائی کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی ضلع گلبرگ وسطی کے تحت کریم آباد چورنگی پر درست مردم شماری، با اختیار شہری حکومت وفوری بلدیاتی انتخابات اور شہر قائد کے گمبھمیر مسائل کے حوالے سے دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مظاہرے سے امیرجماعت اسلامی ضلع گلبرگ وسطی فاروق نعمت اللہ، جمعیت اتحاد العلما کراچی کے ناظم اعلیٰ مولانا عبد الوحید، اسمال ٹریڈرز اینڈ کاٹیج انڈسٹریز کراچی کے صدر محمود حامد، نائب امیر ضلع خالد صدیقی، قیم ضلع گلبرگ وسطی کامران سراج، جے آئی یوتھ ضلع گلبرگ وسطی کے صدر فیصل، تاجر رہنما بابر خان بنگش ودیگر نے بھی خطاب کیا۔ مظاہرے میں سابق سٹی ناظم نعمت اللہ خان کے دور میں کرائے گئے ترقیاتی کاموں پر مشتمل ڈاکیو مینٹری بھی دکھائی گئی۔ مظاہرے میں شرکا نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھائے ہوئے تھے جن پر تحریر تھا کہ حق دو کراچی کو، پورا ٹیکس اور آدھی گنتی نامنظور نامنظور، تین کروڑ عوام کا نعرہ مردم شماری دوبارہ، وفاق کے ارادے چکناچور آدھی گنتی نامنظور، وفاق کا خواب چکنا چور آدھی گنتی نامنظور، لولی پاپ نہیں بااختیار شہری حکومت، کوٹہ سسٹم ختم کرو، پورا ٹیکس اور آدھی گنتی نامنظور، کراچی کے نوجوان بے روزگار کیوں؟، اتحادی جماعتوں کی سیاست بازی نہیں چلے گی، کراچی کا مطالبہ مردم۔شماری دوبارہ ، گیس کی لوڈ شیڈنگ فوری ختم کرو، بھوکے بچو ںکی پکار گیس کی فراہمی لگاتار۔حافظ نعیم الرحمن نے خطاب کرتے ہوئے مزیدکہاکہ جماعت اسلامی کراچی کے تین کروڑ سے زائد شہریوں کے حقوق کا مطالبہ کررہی ہے ،شہر کراچی ترقی یافتہ شہر تھا ، 50کی دہائی میں ٹرام چلا کرتی تھی لیکن آج کی نسلوں کے لیے ٹرانسپورٹ کا کوئی نظام تک موجود نہیں ہے ،سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں ،جماعت اسلامی عوامی جدوجہد کے ذریعے ٹرانسپورٹ کا نظام قائم کروائے گی ،گزشتہ دنوں شیخ رشید نے کراچی سرکلر ریلوے کا اعلان کر کے جعلی افتتاح کیا ،کراچی سرکلر ریلوے میں آج تک ایم کیو ایم ہر حکومت کا حصہ رہی ہے اور آج بھی پی ٹی آئی کے ساتھ وفاق میں برابر کی شریک ہے ، مردم شماری کی منظوری میں ایم کیو ایم نے کیا کردار ادا کیا؟،پی ٹی آئی کی کراچی سے قومی اسمبلی کی 14اور سندھ اسمبلی کی 21نشستیں ہیں لیکن انہوں نے کراچی کے لیے کچھ نہیں کیا۔ فاروق نعمت اللہ خان نے کہا کہ آج کریمی چورنگی پر شہری اپنے حقوق کے لیے جمع ہوئے ہیں اور اس امید کا اظہار کررہے ہیں کہ جماعت اسلامی نے جس طرح ماضی میں کراچی کی تعمیر و ترقی کے لیے مثالی ،ریکادڈ ترقی یافتہ کام کروائے تھے اب بھی جماعت اسلامی ہی کراچی کے مسائل حل کرسکتی ہے ۔