پاکستانی معاشی اہداف کیلئے سروے کا آغاز کردیا ،عالمی بینک

107

اسلام آباد (کامرس ڈیسک) عالمی بینک نے پاکستان کی معاشی وسماجی ترقی اہداف کے حصول کیلئے ترجیحات کے تعین اورمالی مدد کی فراہمی میں عالمی بینک کے کردار کے حوالہ سے خصوصی سروے کاآغازکردیا ہے۔ پاکستان میں عالمی بینک کے کنٹری ڈائریکٹرناجی بن حسائن نے سماجی رابطہ کی ویب سائیٹ پرایک پیغام میں کہاہے کہ پاکستان کی معاشی وسماجی ترقی اہداف کے حصول کیلئے ترجیحات کے تعین اورمالی مدد کی فراہمی میں عالمی بینک کے کردار کے حوالہ سے خصوصی سروے میں پاکستانی شہریوں کوحصہ لینا چاہئیے۔یہ سروے عالمی بینک کی جانب سے پاکستان کیلئے نئے کنٹری شراکت داری فریم ورک (سی پی ایف) کی تیاریوں کاحصہ ہے۔ عالمی بینک 2022 سے لیکر2026 تک کی مدت کیلئے پاکستان کے ساتھ نئے شراکت داری فریم ورک کی تشکیل کے ضمن میں مشاورتی عمل کاآغازکر چکا ہے۔فریم ورک میں پاکستان کیلئے ا سٹریٹجک معاونت کے خدوخال واضح ہوں گے۔ عالمی بینک ہر 4سے لیکر پانچ سالوں کے بعد ممبرممالک کیلئے نیا کنٹری پارٹنر شپ فریم ورک تیارکرتا ہے جس میں کسی بھی رکن ملک کی بدلتی ہوئی ترجیحات شامل کی جاتی ہے۔ناجی بن حسائن نے کہا ہے کہ نئے فریم ورک میں عالمی بینک کی معاونت کوپاکستان کے ترقیاتی ایجنڈا سے مربوط کیا جا ئے گا۔انہوں نے کہاکہ نئے فریم ورک کی تشکیل میں کلیدی شراکت داروں، حکومتی حکام، پارلیمینٹرینز، نجی شعبہ، سول سوسائٹی کی تنظیموں بشمول خواتین اور نوجوانوں کے گروپ، بین الاقوامی مالیاتی اداروں ، سفارتی کمیونٹی ،میڈیا اورماہرین تعلیم سے مشاورت کی جارہی ہے۔ اس مشاورت کا مقصد پاکستان کی اقتصادی اورسماجی چیلنجوں پرکلیدی شراکت داروں کے متنوع رائے اورخیالات سے آگاہی حاصل کرنا اوراس کی روشنی میں معاونتی عمل کو آگے بڑھاناہے۔