شکاگو: 3 ماہ تک ایئرپورٹ میں چھپا رہنے والا شخص گرفتار

252

شکاگو: عالمی وبا کورونا وائرس کے خوف سے لاس اینجلس سے تعلق رکھنے والا آدیتیہ سنگھ نامی  36 سالہ شخص 3 ماہ تک شکاگو کے بین الاقوامی ایئرپورٹ کے ایک محفوظ سیکشن میں چھپا رہا۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق کورونا وائرس کی وبا نے دنیا بھر میں کروڑوں افراد کو متاثر کیا جبکہ اس بیماری کے خوف سے ایک شخص کئی ماہ تک ایئرپورٹ میں چھپا رہے تاکہ اسے اپنے گھر نہ جانا پڑے،  مگر ایسا ہوا ہے اور وہ بھی امریکا کے شہر شکاگو میں۔

شکاگو کے بین الاقوامی ایئرپورٹ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ لاس اینجلس سے تعلق رکھنے والا 36 سالہ شخص 3 ماہ تک ایئرپورٹ میں چھپا رہا جبکہ  مذکورہ شخص کا کہنا ہے کہ وہ کورونا وائرس سے بہت زیادہ خوفزدہ ہونے کی وجہ سے لاس اینجلس میں اپنے گھر نہیں جانا چاہتا۔

آدیتیہ سنگھ نامی اس شخص کو 3 ماہ بعد جاکر گرفتار کیا گیا اور اس پر ایک ایئرپورٹ کے ممنوعہ حصے میں مجرمانہ طور پر گھسنے اور چوری کے الزامات عائد کیے گئے  ہیں جبکہ پراسیکیوٹرز کا کہنا ہے کہ یہ شخص لاس اینجلس سے ایک پرواز سے شکاگو کے اوہارا ایئرپورٹ پر 19 اکتوبر کو آیا تھا۔

پراسیکیوٹرز کے مطابق تقریبا 3 ماہ بعد 16 جنوری کو آدیتیہ سنگھ نے یونائٹیڈ ایئرلائنز کے 2 ملازمین کے پاس پہنچا تو انہوں نے اس کی شناخت مانگی جس پر آدیتیہ سنگھ نے مبینہ طور پر ایک ایئرپورٹ آئی ڈی بیج دکھایا جس کے گم ہونے کی رپورٹ اس کے مالک (ایئرپورٹ کا ایک آپریشن منیجر) نے 26 اکتوبر کو درج کرائی تھی۔

اسسٹنٹ اسٹیٹ اٹارنی کیتھلین ہیگرٹی کے مطابق ایئرپوررٹ پر آنے والے مسافر اس شخص کو غذا فراہم کرتے تھے جس کا کوئی مجرمانہ پس منظر نہیں جبکہ آدیتیہ سنگھ نے یہ بیج ایئرپورٹ میں دریافت کیا تھا اور وہ کورونا کے باعث گھر جانے کے خیال سے خوفزدہ تھا۔

خیال رہے آدیتیہ سنگھ نے ماسٹر ڈگری حاصل کی ہوئی ہے مگر بیروزگار ہے جبکہ لاس اینجلس میں دیگر کئی افراد کے ساتھ ایک کمرے میں رہ رہا تھا۔

واضح رہے آدیتیہ سنگھ کو ایک ہزار ڈالرز کے عوض ضمانت پر رہا کیا جائے گا تاہم اس کے ایئرپورٹ میں داخلے پر پابندی عائد کردی  گئی ہے۔