نیپولین کمرے کی چابی 82 ہزار پاؤنڈ میں فروخت

200

پیرس: انقلابِ فرانس کے فوجی رہنما نیپولین بوناپارٹ کے کمرے کی چابی 82 ہزار پانڈ میں نیلام ہو گئی۔

فرانس 18ویں صدی میں انقلاب کے دوران مہم چلانے والے فوجی جنرل نیپولین بوناپارٹ کا نام دنیا میں آج بھی لیا جاتا ہے اور ان کی شہرت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ جس کمرے میں وہ قیدی کے طور پر ہلاک ہوئے اس کی چابی ایک شہری نے 81 ہزار 900 پانڈ میں خرید لی ہے۔

فرانسیسی میڈیا  کے مطابق جلاوطن نیپولین بوناپارٹ جس کمرے میں انگریزوں کے قیدی تھے جبکہ اس کی زنگ آلود چابی کی قیمت کے بارے میں اندازہ یہی لگایا گیا تھا  کہ تین سے پانچ ہزار پانڈز تک قیمت لگے گی لیکن چابی اس سے 16 گنا زیادہ قیمت میں فروخت ہوئی۔

یاد رہے نیپولین بوناپارٹ کا انتقال 1821 میں جنوبی ایٹلانٹک کے ایک دوردراز جزیرے پر ہوا جہاں انگریزوں نے انہیں لانگ وڈ ہاس نامی محل میں قید کیا ہوا تھا۔

نیلام گھر کی انتظامیہ کا کہنا تھا کہ گیارہ افراد نے اس کی بولی میں حصہ لیا اور بولی لگائی تھی جبکہ پانچ انچ کی چابی کو چارلس ریچرڈ فاکس نامی ایک فوجی جنرل واپس برطانیہ لائے تھے اور چارلس نے اس جزیرے کا دورہ کیا تھا جب نیپولین وہاں قید تھے۔

نیلام گھرکی انتظامیہ کے مطابق کہا جاتا ہے کہ چارلس رچرڈ فاکس اس چابی کو اپنی والدہ کے لیے تحفے کے طور پر لائے تھے جو نیپولین کی مداح تھیں۔

نیلامی کروانے والی کمپنی سوتھبائی میں دیوڈ مکڈونلڈ نامی ماہر کا کہنا ہے کہ نیپولین سے تعلق رکھنے والی چیزیں ہم ہر وقت دیکھتے ہیں اور اہم تصاویر یا ان کے عالی شان گھروں یا ان کا فرنیچر لیکن اس چابی کی بات ہی کچھ اور ہے، خاص طور پر وہ جگہ جہاں سے یہ آئی ہے وہ بہت اہمیت کی حامل ہے اور اسی طرح یہ بات بھی بہت اہم ہے کہ اس کمرے کی چابی ہے جہاں نیپولین کا انتقال ہوا۔