ٹک ٹاک: 18سال سے کم عمر صارفین کیلئے نئی پالیسی متعارف

162

بیجنگ: دنیا بھر میں مقبول چین کی مختصر ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک نے 18 سال سے کم عمر صارفین کے لیے نئی پالیسی متعارف کرادی ہے جبکہ کم عمر صارفین کے تحفظ کے لیے پرائیویسی پالیسی کو زیادہ سخت کردیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ٹک ٹاک کی جانب سے جاری کیے جانے والی بیان کے مطابق 18 سال یا اُس سے کم عمر صارفین کے لیے پالیسی میں اہم تبدیلیاں کی گئی ہیں اور 13 جنوری کو ٹک ٹاک کمپنی کی جانب سے نئے پرائیویسی ضوابط کا اعلان کیا گیا ہےجن کا اطلاق 18 سال سے کم عمر صارفین پر ہوگا۔

ٹک ٹاک ایپ میں نئی تبدیلیوں کے تحت اب 18 سال یا اُس سے کم عمر بچوں کے اکاؤنٹ پبلک کے بجائے پرائیوٹ کردیے جائیں گے جبکہ ٹک ٹاک نے 15 سال کی عمر تک کے صارفین کے اکاؤنٹ پر ویڈیو ڈاؤن لوڈ کرنے کی سہولت بھی ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

خیال رہے اب نئے ضوابط کے تحت اب 13 سے 15 سال کی عمر کے تمام رجسٹر صارفین کے اکاؤنٹس بائی ڈیفالٹ پرائیویٹ ہوجائیں گے جبکہ اس عمر کے صارفین کے لیے ایوری ون کمنٹ سیٹنگ کا آپشن ختم کردیا جائے گا اور کمنٹس کے لیے فرینڈز یا نو ون کے آپشن باقی رہیں گے۔

ٹک ٹاک نے اپنے حالیہ بیان میں واضح کیا کہ اُس نے پالیسی میں تبدیلی حفاظتی اقدامات کے تحت کی ہے تاکہ بچے محفوظ طریقے سے پلیٹ فارم سے جڑے رہیں اور والدین کے تحفظات کو بھی ختم کیا جاسکے اور ہم اپنے کم عمر صارفین کی آن لائن پرائیویسی کو تحفظ دینا چاہتے ہیں۔

ٹک ٹاک کے مطابق پندرہ سال یا اُس سے کم عمر بچے اب ڈو اِٹ فیچر استعمال نہیں کرسکیں گے جبکہ 16 سے 18 سال تک کی عمر کے بچوں کو یہ سہولت دستیاب رہے گی۔

کمپنی کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ عمر کا تعین اکاؤنٹ بناتے وقت درج کی جانے والی تاریخ پیدائش پر کیا جائے گا، جن اکاؤنٹس پر پابندی عائد کی گئی ہے انہیں بذریعہ نوٹی فکیشن آگاہ کردیا جائے گا۔

واضح رہے نئی پالیسی کے تحت صارفین صرف وہ ویڈیوز ڈاؤن لوڈ کرسکیں گے جو 16 سال یا اس سے زائد عمر کے افراد پوسٹ کریں گے، مگر 16 سے 17 سال کی عمر کے صارفین کے لیے ان کی ویڈیوز ڈاؤن لوڈ کرنے کی سیٹنگ بائی ڈیفالٹ آف ہوگی۔

دوسری جانب ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک کے خالقین ویڈیو کا دورانیہ تین گنا بڑھا کر اسے تین منٹ کرنے پر غور کررہے ہیں، اس وقت ٹک ٹک پر 60 سیکنڈ یعنی ایک منٹ سے زائد کی ویڈیو اپ لوڈ نہیں کی جاسکتی۔