وفاقی وزراء نے پی ڈی ایم کو خبردارکردیا

79

اسلام آباد: وفاقی وزراء  نے مشترکہ  پریس کانفرنس  سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ احتجاج کے دوران پاکستان ڈیموکریٹک مؤمنٹ (پی ڈی ایم ) قانون ہاتھ میں نہ لے،ورنہ سخت  کاروائی کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق جمعرات کو وزیرداخلہ شیخ رشید احمد،وزیر دفاع پرویز خٹک،وزیرِ اطلاعات و نشریات شبلی فراز،وزیر قانون فروغ نسیم اور وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نےکابینہ اجلاس کے بعدمشترکہ پریس کانفرس سے خطاب کیا۔ شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ اپوزیشن نے پہلے اسمبلیوں سے استعفے دینے کا اعلان کیا مگر اب یہ  اپنے مؤقف سے انحراف کرتے ہوئے سینٹ الیکشن میں بھر پور حصہ لینے  جا رہے ہیں ۔جس بات کہ یہ کل خلاف تھا آج وہی کام کر رہے ہیں ،ہمیں امید ہے کہ پی ڈی ایم الیکشن کمیشن کے باہر ہونے والے احتجاج میں قانون ہاتھ میں نہیں  لے گی اگر ایسا ہوا تو ان کے خلاف قانون کے مطابق نمٹا جائے گا۔پاکستانی سیاست بند گلی کا شکار نہیں ہوئی ہے اس میں ابھی بہت گنجائش باقی ہے۔ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ اسلام آبا د پولیس کے رویے میں بہت جلد تبدیلی نظر آئے گی۔ٖ فضل الرحمن کو ایسے نعروں سے گریز کرنا چاہئے جس سے معاشرے میں انتشار پھیلے۔

شبلی فراز نے کہا کہ احتجاج کرنا سب کا جمہوری حق ہے،حکومت نے اپوزیشن کو اسلام آباد آنے سے نہیں روکا  البتہ احتجاج کے لیے جگہ کا تعین حکومت  کرے گی۔مولانا فضل الرحمن کو صرف پیزا  نہیں بلکہ میٹھائی بھی کھلائیں گے۔فروغ نسیم نے سپریم کورٹ کے فیض آباد دھرنے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ احتجاج کرنے کے لیے ہر جگہ مناسب نہیں ہوتی،شہریوں کے تمام حقوق کا تحفط کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے۔فواد چودھری کا کہنا تھا کہ اپوزیشن تمام ریاستی ادروں کو ہدفِ تنقید بنارہے ہی  جو قابل مذمت ہے۔