پھٹکری کا استعمال اوراس کے فوائد

577

پھٹکڑی (پھٹکری) ویسے تو عام سی چیز ہے جو ہر جگہ آسانی سے بہت کم قیمت میں دستیاب ہوجاتی ہے لیکن اسکی افادیت بہت زیادہ ہے اور  مارکیٹ سے با آسانی سفید ڈَلیوں کی صورت میں مل جاتی ہے جس کے استعمال سے صحت اور خوبصورتی پر حیرت انگیز فوائد حاصل ہوتے ہیں جن سے اکثر افراد ناواقف نظر آتے ہیں۔

پھٹکری ایک طرح کا نمک ہوتا ہے جو بازاروں میں باآسانی پاؤڈر اور ڈلیوں کی صورت میں دستیاب ہوتاہے جبکہ پھٹکری بظاہر کوئی خاص شے نہیں لیکن پھٹکری میں پوشیدہ ہیں صحت کے خزانے اور اس کا استعمال اکثر گھروں میں پانی صاف کرنے کے لیے بھی کیا جاتاہے کیوں کے یہ ایک بہترین جراثیم کُش جز ہے۔

خواتین اکثر چہرے کے بالوں سے پریشان نظر آ تی ہیں جن سے چھٹکارہ حاصل کرنے کے لیے ہر ہفتے تھریڈنگ، ویکسنگ کے لیے پارلر کا رُخ کرنا پڑتا ہے اور ان غیر ضروری بالوں کے مستقل خاتمے کے لیے پھٹکری کا استعمال نہایت مفید ہےجبکہ غیر ضروری بالوں سے لے کر صاف ستھری بے داغ، جھڑیوں سے پاک جلد تک پھٹکری کے استعمال کے بے شمار فوائد حاصل ہوتے ہیں۔

پھٹکری(ایلم) کے استعمال کے چند آزمودہ فوائد مندرجہ ذیل ہیں ۔:۔

چہرے کے غیز ضروری بالوں کے صفائے کے لیے

خواتین اگر چہرے پر موٹے اور کالے بالوں سے جان چھڑا نا چاہتی ہیں تو پھٹکری پیس کر  محفوظ کر لیں، اب اسے روزانہ ہم وزن پانی میں ملا گھول کر روئی کی مدد سے چہرے پر لگائیں، خصوصاً جب بھی تھریڈنگ یا ویکسنگ کریں اسے اپنے چہرے پر ضرور لگائیں جبکہ  یہ عمل ہفتے میں کم از کم تین بارع ضرور کریں اور اس عمل سے چہرے کے بالوں کی افزائش میں کمی آئے گی اور  پھٹکری کی ڈلی سے براہ راست بھی گیلے چہرے پر مساج کی جا سکتی ہے۔

کیل، مہاسوں اور دانوں سے نجات

کیل مہاسوں اور دانوں سے نجات حاصل کرنے کے لیے پھٹکری کو پیس کے پانی میں شامل کر کے دانوں اور کیل مہاسوں پر لگائیں بیس منٹ لگا رہنے دیں اور بعد میں دھو لیں۔

یہ عمل دانوں سے نجات حاصل کرنے کے لیے روزانہ کریں، پھٹکری لگانے کی صورت میں اگر جلن محسوس ہو تو فوراً چہرہ دھو لیں اور یہ ٹوٹکا آئندہ مت دوہرائیں۔

جھریاں سے نجات

جھریوں سے نجات حاصل کرنے کے لیے پھٹکری کے ایک چھوٹے ٹکڑے کو گیلا کر کے آہستہ آہستہ اپنے چہرے پر رگڑیں کچھ دیر بعد عرق گلاب سے چہرے کو دھو لیں اور اس کے بعد موسچرائزر کا استعمال کریں۔

جلدی بیماری داد اور چنبل کا علاج

پسی ہوئی پھٹکری کو پانی یا سرکے میں ملا کر صبح شام متاثرہ حصے پر لگائیں، اس سے داد اور چنبل جیسی بیماریوں میں شفا ملے گی۔

نکسیر پھوٹنے کا علاج

گرمیوں میں اکثر اوقات بچوں اور بڑوں کی نکسیر پھوٹنے لگتی ہے، نکسیر پھوٹنے کے مریض پھٹکری کو پانی میں حل کے کے اس کے قطرے ناک میں ٹپکائیں، اس سے جلد آرام آ جائے گا۔

خشکی سے نجات

موسم سرما میں سر پر خُشکی ہر دوسرے فرد کا مسئلہ بن جاتا ہے ، سر میں خشکی ہونے کی صورت میں شیمپو کے ساتھ ایک چٹکی پھٹکری اور نمک شامل کر کے سر دھو لیں خشکی ختم ہو جائے گی۔

پھٹی ہوئیں ایڑیوں کا علاج

پھٹکری کو توے پر اتنا گرم کریں کے وہ پگھل کے بھربھری سی نرم شکل میں آ جائے، اب اسے ٹھنڈا ہونے پر ناریل کے تیل میں ملا کے متاثرہ حصوں پر لگائیں، ایڑیاں صاف ستھری ملائم ہو جائیں گی۔

پسینے، پاؤں کی بد بو کے خاتمے کے لیے

جن افراد کو زیادہ پسینہ آتا ہو اور پسینے میں بدبو کی بھی شکایت ہو تو  ایسے افراد نہاتے وقت پانی میں پھٹکری شامل کر لیں، پسینے کی بو ختم کرنے کے لیے دن میں کسی بھی وقت اس کا براہ راست بھی بغلوں میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔

زخموں کے لیے

ایک ماشہ پھٹکڑی کو پاؤ بھر گرم پانی میں گھول کر دن میں دو بار زخموں کو دھونے سے زخم اچھے ہو جاتے ہیں اور یہ زخموں کو خشک کرنے کے لیے نہایت مفید ثابت ہوتی ہے جبکہ  زخموں کا گنداپن دور کرنے کے لئے پھٹکری عجیب چیز ہے اور اس سے گلا سڑا اور گندا گوشت دور ہوجاتا ہے۔

زہریلی مکھی یا بچھو کے زہر کو دور کرنے کیلئے

پھٹکڑی کو پانی میں شامل کرکے ڈنگ پر اور اس کے ارد گرد لگانے سے درد اور جلن کو فوری آرام آجاتا ہے۔

گردے اور مثانہ کی پتھری کے لئے

دو ماشہ پھٹکڑی بریاں صبح و شام پانی کے ساتھ کھائیں، زیادہ تکلیف کے وقت دوپہر میں بھی کھائیں۔

مرگی کا علاج

ایک ماشہ پھٹکڑی بریاں دن میں دو بار گرم دودھ کے ساتھ کھانے سے مرگی دور ہو جاتی ہے۔

غدود(گلٹیوں) کا علاج

دو ماشہ پھٹکری بریاں گرم دودھ کے ساتھ کھائیں، گیہوں اور السی کے آٹے کو سرسوں کے تیل میں پکا کر ٹکیہ بنائیں پھر اس پر باریک پسی ہوئی پھٹکڑی ڈال کر گرم گرم گلٹی پر باندھ دیں اور دن میں تین بار اس نسخہ کو آزمائیں۔

دانتوں سے خون آنے کا علاج

ایک تولا کوئلہ، جامن کی لکڑی اور ایک تولا پھٹکڑی، سب کو پیس کر دانتوں پر ملنے سے خون آنا بند ہو جاتا ہے۔

(نوٹ: خیال رہے طبی ماہرین کی رائے جاننا زیادہ ضروری ہے)