متحدہ خود بھی کراچی سے سلیکٹ ہوتی رہی ہے اس نے شہر کیلئے کیا کرلیا، بلاول بھٹو

132

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین نے ایم کیو ایم پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ بات میری سمجھ سے بالاتر ہے کہ وہ کیوں وفاق کیساتھ کھڑی ہے جبکہ ایم کیو ایم اپنی مجبوریوں کے بجائے عوام کی مجبوریوں کا سوچے کیونکہ  اب بھی وفاقی حکومت صوبوں کو حقوق نہیں دے رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ مردم شماری پر پیپلز پارٹی نے پہلے دن سے اعتراض کیا ہے اور اب بھی مردم شماری میں عوام کی نمائندگی صحیح نہیں کی گئی تو مزید کم شیئر ملے گا۔

بلاول بھٹو کا فشرمین چورنگی سے ابراہیم حیدری روڈ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ تحریک انصاف کی حکومت ایم کیو ایم کے ووٹوں کی وجہ سے قائم ہےجبکہ متحدہ خود بھی کراچی سے منتخب نہیں بلکہ ‘سلیکٹ’ ہوتی رہی اور ہم پر تنقید کرنے والے بتائیں کہ انہوں نے شہر قائد کے لیے کیا کیا؟

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہناتھا کہ ایم کیو ایم والے میرے پیدا ہونے سے پہلے یہاں سے منتخب نہیں سلیکٹ ہوتے رہے جبکہ ایم کیو ایم سے پوچھیں وہ بھی وفاق کا حصہ ہے اور  اس نے ڈسٹرکٹ کورنگی کے لیے کیا کیا؟ کیا ڈسٹرکٹ کورنگی میں ایم کیو ایم نے ایک اینٹ لگائی؟ صاف پانی، انفراسٹرکچر کا وعدہ پورا کیا؟

چیئرمین بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ورلڈ بینک نے کراچی کی ضروریات کے لیے 10 بلین ڈالر کا تخمینہ لگایا تھا اور ورلڈ بینک کا موقف وفاق کو بتاتے ہیں تو ہمیں کہا جاتا ہےکہ ہمارے پاس پیسہ نہیں ہے جبکہ افسوس کراچی سے منتخب لوگ ہر بار حکومت کا حصہ رہے مگر کراچی کو حصہ نہ دلا سکے ہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ ہم اپنے شیئر سے زیادہ نہیں، اپنا حق مانگ رہے ہیں، اگر ہمیں پورا شیئر مل جائے تو کراچی کی قسمت بدل دیں گے۔ بلاول بھٹو نے حکومت کو ایک بار پھر کٹھ پتلی قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ تو جا رہے ہیں، ان کی حکومت ختم ہونے والی ہے۔