بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی: 3 کشمیری نوجوان شہید

196

سرینگر: مقبوضہ کشمیر میں ظالم اور قابض بھارتی فوج نے ریاستی دہشتگردی کا تسلسل جاری رکھتے ہوئے مزید تین نوجوانوں کو شہید کر دیا ہے۔

بین الاقوامی میڈیا  کے مطابق سرینگر کے علاقے لاوے پورہ میں قابض بھارتی فوج نے گھر گھر تلاشی کے لیے محاصرہ کیا اور اس دوران داخلی و خارجی راستے بند کردیئے گئے جبکہ انٹرنیٹ اور موبائل سروس بھی معطل رہیں۔

میڈیا کے مطابق سرچ آپریشن کے دوران بھارتی فوج نے گھر پر اندھا دھند فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں 3 کشمیری نوجوان شہید ہوگئے، جنکی شناخت زبیر احمد ، اعجاز مقبول اور اطہر مشتاق کے نام سے ہوئی ہے جبکہ  تینوں نوجوانوں کا تعلق شوپیاں اور پلوامہ سے تھا اور وہ سری نگر میں تعلیم کی غرض سے ٹھہرے ہوئے تھے۔

نوجوانوں کی شہادت کے بعد اہلخانہ نے نے بھارتی فوج کی جارحیت کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اور جدوجہد آزادی کشمیر کے حق میں نعرے لگائے اور مظاہرین کی طرف سے مطالبہ کیا گیا کہ شہید کیے گئے نوجوانوں کی میتیں ہمارے حوالے کی جائیں۔

شہید کشمیری نوجوان اعجاز مقبول کے اہل خانہ نے بتایا کہ وہ کشمیر یونیورسٹی میں امتحان دینے کے لیے گھر سےگیا تھا جس کے بعدظالم فوج نے اسے جعلی مقابلے میں شہید کر دیا۔

دوسری جانب  مقبوضہ وادی میں بھارتی فوج کی درندگی پھر بے نقاب ہو گئی جب جولائی میں راجوڑی کے  بھارتی فوج نے تین کشمیری مزدوروں کو جعلی مقابلوں میں شہید کرنے کا اعتراف کر لیا ہے ۔