ایر پورٹ حملہ کیس میں نامزد 4ملزمان بری

68

کراچی(نمائندہ جسارت) انسداد دہشت گردی کی عدالت نے 6سال بعد ائر پورٹ حملہ کیس کا بڑا فیصلہ جاری کر دیا۔عدالت نے پراسیکیوشن کی جانب سے عد م شواہد پر کالعدم تحریک طالبان کے سہولت کاری میں نامزد اے پی
ایم ایل سندھ کے کنونیئر سرمداحمد صدیقی سمیت 4ملزمان کو بری کر دیا۔ منگل کو انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے 6سال بعد ائر پورٹ حملہ کیس کا فیصلہ سنادیا۔ عدالت نے پراسیکیوشن کی جانب سے عد م شواہد پر کالعدم تحریک طالبان کے سہولت کاری میں نامزد اے پی ایم ایل سندھ کے کنونیئر سرمداحمد صدیقی ، ندیم عرف برگر،آصف ظہیر اور عبدالراشد کو بری کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ ملزمان کسی اور مقدمے میں نامزد نہیں ہیں تو انہیں رہا کیا جائے جبکہ عدالت نے کالعدم تحریک طالبان کے ملا فضل اللہ، ترجمان شاہد اللہ شاہد سمیت 8مفرور ملزمان کے تاحیات وارنٹ جاری کردیے۔ قبل ازیں سرمد احمد صدیقی کے وکیل امتیاز علی کا اپنے دلائل میں کہنا تھا کہ مقدمے میں 98 میں 39گواہان نے بیانات قلمبند کرائے ہیں اور سی ٹی ڈی کی جانب سے ملزمان کے خلاف کوئی ٹھوس شواہد پیش نہیں کیے گئے۔ استغاثہ کے مطابق8 جون 2014ء کو ائر پورٹ پر 10دہشت گردوں نے حملہ کیا تھا جس کے نتیجے میں سیکورٹی اہلکار اور ائر پورٹ ملازمین سمیت 27افراد مارے گئے تھے جبکہ مقابلے میں 10 دہشت گرد بھی ہلاک ہوئے،واقعے کے بعد سرمد احمد صدیقی و دیگر کو گرفتار کیا گیا اور ملزمان نے مبینہ طور پر ہلاک دہشت گردوں کو لا جسٹک، اسلحہ اور فنڈ فراہم کیا تھا۔