سینیٹ الیکشن:سپریم کورٹ میں صدارتی ریفرنس سماعت کیلئے مقرر

161

اسلام آباد: چیف جسٹس آف پاکستان نے سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ کے ذریعے کروانے کے معاملے پر صدارتی ریفرنس سماعت کیلئے مقرر کر دیا ہے  جبکہ چیف جسٹس کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ 4 جنوری کو سماعت کرے گا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس کی سربراہی میں سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ کے ذریعے کروانے کے معاملے پر صدارتی ریفرنس سماعت کیلئے مقرر کر دیا گیا ہے جس کی سماعت 5 رکنی لارجر بینچ 4 جنوری کو کرے گا جبکہ  سپریم کورٹ نے اٹارنی جنرل کو اس معاملے پر نوٹس بھی جاری کر دیا ہے۔

خیال رہے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی منظوری کے بعد سینیٹ الیکشن شو آف ہینڈز کے ذریعے کرانے کے لئے ریفرنس سپریم کورٹ میں دائر کیا گیا تھا جبکہ ریفرنس میں سینیٹ کے الیکشن اوپن بیلٹ کے ذریعے کرانے کے معاملے پر سپریم کورٹ سے رائے مانگی گئی ہے۔

صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے وزیر اعظم کی تجویز پر آئین کے آرٹیکل 186 کے تحت ریفرنس سپریم کورٹ بھجوانے کی منظوری دے دی ہے جبکہ ریفرنس میں آئین میں ترمیم کیے بغیر الیکشن ایکٹ 2017ء کی سیکشن 122 چھ میں ترمیم پر سپریم کورٹ کی رائے مانگی گئی ہے۔

دوسری جانب ریفرنس میں کہا گیا ہے کہ سینٹ الیکشن میں خفیہ بیلٹنگ سے ارکان کی خرید و فروخت میں کالا دھن استعمال ہوتا ہےجس سے سینٹ الیکشن کی شفافیت پر سوال اٹھتے ہیں جس پر سینٹ کا الیکشن اوپن بیلٹ کے تحت ہونے سے انتخابی عمل میں شفافیت آئے گی اور اس اہم آئینی نکتے پر سپریم کورٹ اپنی رائے دے۔

واضح رہے وفاقی کابینہ نے 15 دسمبر کو سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ کے معاملے پر سپریم کورٹ سے رائے لینے کی منظوری دی تھی جس پر چیف جسٹس کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ 4 جنوری کو سماعت کرے گا۔