نارووال اسپورٹس سٹی کیس میں احسن اقبال پر فرد جرم عائد

249

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے نارووال اسپورٹس سٹی کیس میں سابق وزیر داخلہ احسن اقبال پر فرد جرم عائد کردی۔

نارووال اسپورٹس سٹی کیس کی سماعت سید اصغر علی نے کی۔ سماعت پر احسن اقبال اور ان کے وکیل جہانگیر جدون عدالت میں پیش ہوئے۔

جج اصغر علی نے ابتدائی سماعت پر احسن اقبال پر فرد جرم عائد کردی اور نیب سے گواہ طلب کرلیے۔ احسن اقبال نے صحت جرم سے انکار کردیا۔

احسن اقبال نے عدالت میں کہا کہ جج نے صرف پر اسیکیوشن کی بات نہیں سننی۔ جج نے پہلے دیکھنا ہوتا ہے یہ کیس بنتا بھی ہے یا نہیں۔ جج اصغر علی نے کہا کہ ہم ایسی باتیں سننے کے لیے یہاں نہیں بیٹھے ہوئے۔

جج نے احسن اقبال کو بات کرنے سے روک دیا اور کہا کہ اگر آپ نے کوئی درخواست دائر کرنی تو کریں یا اپنے وکیل کے ذریعے بات کریں۔ ہم سامنے پیش کیا گیا ریکارڈ دیکھ کر ہی کہہ رہے ہیں یہ بادی النظر میں کیس بنتا ہے۔

جہانگیر جدون نے کہا کہ کہاں کیس بنتا ہے۔ کیا ہمارے ماتھے پر لکھا ہوا ہے؟ جج اصغر علی نے کہا کہ فیصلے سے پہلے فیصلہ نہیں سنا سکتے۔ شواہد دیکھے جائیں گے۔

عدالت نے سابق ڈی جی پاکستان اسپورٹس بورڈ اختر نواز گنجیرا اور سرفراز رسول، وزارت منصوبہ بندی کے افسر آصف شیخ اور پرائیوٹ کنٹریکٹر محمد احمد پر بھی فرد جرم عائد کردی۔

احتساب عدالت نے 12 جنوری کو احسن اقبال کے خلاف نیب سے گواہ طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔