جِلد پر پھوڑا نکلنے کی صورت میں کیا کریں؟

256

 کسی بھی انفیکشن میں جسمانی ردِعمل کی صورت میں جسم پر پھوڑا نکل سکتا ہے۔

جب جراثیم جلد میں کسی زخم کے راستے جسم میں داخل ہوجاتے ہیں جیسے کٹ ، کیڑے کے ڈنک اور جلنے سے، تو وہاں بعض اوقات ایک یا ایک سے زائد پھوڑے بن جاتے ہیں۔

زیادہ تر جراثیم کا تعلق صحت مند جسم کے قدرتی جراثیم سے نہیں ہوتا اسی لیے مدافعتی نظام ہر وقت غیر متعلقہ جراثیم جو انفیکشن کا باعث بنتے ہیں، کی تلاش میں کام کرتا رہتا ہے۔ یہ جاننے کے بعد کہ کچھ جراثیم جسم میں داخل ہوگئے ہیں، مدافعتی نظام ایک فوج کو اُس مراثرہ جگہ پر بھیج دیتا ہے جو کہ دراصل وائٹ بلڈ سیلز ہوتے ہیں جو ان جراثیم کو ختم کردیتا ہے۔

 ان میں سے کچھ مدافعتی خلیے پیپ بن جاتے ہیں جو کہ مردہ جِلد اور جراثیم کی صورت میں ایک پھوڑے کی شکل میں ظاہر ہوسکتے ہیں۔

جب پیپ کسی پھوڑے میں جمع ہوجاتی ہے تو یہ خارج نہیں ہوسکتی۔ جیسے جیسے پیپ جمع ہوتی جاتی ہے، یہ جِلد اور آس پاس ٹشوز کے خلاف دباؤ ڈالتی ہے جس سے درد پیدا ہوتا ہے۔

بیشتر پھوڑوں کا علاج گھر پر ہی ہوجاتا ہے۔ اگر آپ کو لگتا ہے کہ آپ کی جلد میں خارش ہے تو اسے چھونے ، دبانے سے پرہیز کریں۔ ایسا کرنے سے انفیکشن پھیل سکتا ہے یا جسم کے اندر زخم کو مزید بڑھا سکتا ہے۔

کسی گرم شے یا کپڑے سے اسے ہلکا سا دبائیں تاکہ یہ کھُل جائے اور جو بھی مواد ہے وہ بہہ جائے۔ یہ عمل دن میں کئی بار دہرائیں اور اس بات کا دھیان رکھیں کہ اس عمل سے پہلے اور بعد میں ہاتھوں کو اچھی طرح دھوئیں۔

اگر یہ پھوڑا کُھل جاتا ہے اور ایک دو ہی دن میں یہ انفیکشن ختم ہونے لگتا ہے تو ٹھیک مگر اگر اس کے برخلاف ہوتا ہے یعنی انفیکشن یا زخم ویسا کا ویسا ہی ہے تو اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں۔