پاکستان کی نئی فضائی کمپنی ایئرسیال کا طیارہ امریکا سے کراچی پہنچ گیا

223

کراچی (رپورٹ:منیر عقیل انصاری) پاکستان کی نئی فضائی کمپنی ایئرسیال کا طیارہ امریکا سے کراچی پہنچ گیا ہے،نئی ائيرلائن دسمبر میں آپریشن کا آغاز کرے گی، پہلے مرحلے میں کراچی، لاہور، اسلام آباد، سیالکوٹ اور پشاور کے درمیان پروازیں چلائی جائیں گی۔

تفصیلات کے مطابق سیالکوٹ کی بزنس کمیونٹی نے نئی فضائی کمپنی کا آغاز کیا ہے۔جس سے پاکستان میں فضائی حدود میں نئی ایئرلائنز کے اضافے سے شہریوں کو آرام دہ سفری سہولیات میسر آسکیں گی۔

نئی ایئرلائن ایئر سیال کا طیارہ امریکا سے کراچی پہنچ گیا ہے۔پاکستان میں نئی فضائی کمپنی کا تعلق سیالکوٹ کی بزنس کمیونٹی سے ہے۔نئی ایئرلائن سیال کا پہلا طیارہ امریکا سے منگوایا گیا ہے۔یہ طیارہ اتوار 29 نومبر2020 کو کراچی ائیرپورٹ پر لینڈ کرگیا ہے۔

انتظامیہ نے کراچی ایئرپورٹ پر نیا طیارہ وصول کیا۔ فضائی کمپنی کے مزید 2 طیارے اگلے ہفتے پاکستان پہنچیں گے۔

ایئرلائن تین ایئربس320 پر محیط فلیٹ سے فلائٹس آپریشن شروع کرے گی۔ کراچی ایئرپورٹ پر فضائی کمپنی کی ایئرسیال کے وائس چیئرین عمرمیر نے فضائی کمپنی شروع کرنے پر اظہار مسرت کیا اور کہا کہ سیال ائیرلائن کا افتتاح جلد کيا جائےگا۔

ائيرلائن دسمبر میں آپریشن کا آغاز کرےگی۔انتظامیہ سال نو کے موقعے پر ڈومیسٹک فلائٹس آپریشن شروع کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

سول ایوی ایشن اٹھارٹی نے جناح انٹر نیشنل ایئر پورٹ پر ایئر سیال کے دفاتر بھی قائم کردیے ہیں۔ واضح رہے کہ ایئر سیال پہلے مرحلے میں ایک سال تک اندرون ملک کا فضائی آپریشن چلائی گی،بین الاقوامی فضائی آپریشن نہیں چلا سکے گی۔

اس ضمن میں ترجمان سول ایوی ایشن اٹھارٹی کا کہنا ہے کہ سی اے اےقوانین کے مطابق کوئی بھی نئی ایئر لائن کم از کم 3 طیاروں سے ایک سالہ مدت تک اندرون ملک پروازیں آپریٹ کرتی ہے تو ایک سالہ کامیاب مدت مکمل کرنے کے بعد ہی بیرون ممالک پروازوں کی اجازت دی جاتی ہے۔