سندھ کے حقوق کی آواز اٹھانے والوں کو دبایا جارہا ہے

44

حیدر آباد (اسٹاف رپورٹر) جئے سندھ محاذ کے چیئرمین ریاض چانڈیو نے حیدر آباد پریس کلب میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ مطالبہ کیا ہے کہ سیکورٹی فورسز کی غیر قانونی کارروائی کا نوٹس لیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ وہ نواز شاہ کی جانب سے دیے گئے ناشتے سے واپس آرہے تھے کہ سیکورٹی اہلکاروں نے تلاشی کے بہانے علی پیلس کے قریب روکا، میں نے انہیں لائسنس یافتہ ہتھیار چیک کرایا مگر پھر بھی انہوں نے ہیڈ کوارٹر لے جاکر میرے ہتھیار سے فائرنگ کی اور ہتھیار واپس کردیا، جب میں نے اس کا سبب معلوم کیا تو انہوں نے بتایا کہ تمہارے ہتھیار کی فارنسنگ رپورٹ کرائی جائے گی۔ ریاض چانڈیو نے کہا کہ اس طرح راستے میں روک کر سیکورٹی اہلکاروں نے غیر قانونی اور غیر اخلاقی حرکت کی ہے، میرے پاس تمام ہتھیار قانونی ہیں اور نادرا سے رجسٹرڈ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحفظ سندھ ریلی کے بعد سندھ کے لیے آواز اٹھانے والے رہنماؤں وکارکنان کو دشمنی کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ یہاں ٹارگٹ کلرز کو گرفتار نہیں کیا جارہا جبکہ سندھ کے وسائل پر قبضے کیخلاف آواز بلند کرنے کو نشانہ بناکر سندھ کی آواز کو دبانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ سے اپیل کی وہ معاملے کا نوٹس لیں۔