لبنان ،سعد حریری ایک بار پھر وزیراعظم نامزد

117
بیروت: صدر میشال عون سیاسی رہنماؤں سے ملاقات کررہے ہیں‘ سعد حریری اپنی نامزدگی کے بعد ذرائع ابلاغ کے نمایندوں سے مخاطب ہیں

بیروت (انٹرنیشنل ڈیسک) لبنان کے سابق وزیراعظم سعد حریری کو ایک بار پھر وزارتِ عظمیٰ کے لیے نامزد کردیا گیا۔ خبررساں اداروں کے مطابق صدر میشال عون نے جمعرات کے روز مختلف پارلیمانی دھڑوں سے مشاورت کے بعد سعد حریری کو وزارت عظمیٰ کا منصب سونپتے ہوئے حکومت سازی کی دعوت دی۔ انہیں پارلیمان کے 65ارکان کی حمایت حاصل ہوئی ہے۔ تاہم ملک کے بڑے مسیحی رہنما اور لبنانی افواج کے منتظم اعلیٰ سمیر جعجع اور صدر میشال عون کی اپنی مسیحی جماعت آزاد محب وطن تحریک نے سعد حریری کی وزارت عظمیٰ کے لیے نامزدگی کی حمایت نہیں کی ہے۔ پارلیمان کے 64 ارکان نے ان کی نامزدگی کے حق میں ووٹ دیا ہے، جب کہ 53ارکان نے ان کی نامزدگی کی مخالفت کی۔ سب سے پہلے سعد حریری کی اپنی جماعت مستقبل تحریک نے ان کا نام پیش کیا تھا، اور اس کے بعد پارلیمان کے اسپیکر نبیہ بری اور سلیمان فرنجیح کے پارلیمانی بلاک نے ان کی حمایت کی ہے۔ لبنانی فوج نے صدارتی محل میں نئے وزیراعظم کی نامزدگی کے لیے مشاورت کے بعد ایک مختصر بیان میں واضح کیا ہے کہ اس نے ستمبر 2019ء میں قومی مکالمے کے موقع پر مکمل طور پر آزاد حکومت کی تشکیل پر زوردیا تھا۔ اس نے اکتوبر 2019ء میں ملک گیر احتجاجی مظاہروں اور اب فرانسیسی صدرعمانویل ماکروں کی اس سال ستمبر میں لبنان میں آزاد ماہرین پر مشتمل نئی حکومت کی تشکیل کے لیے مجوزہ سیاسی منصوبے سے قبل یہ تجویز پیش کی تھی۔ اسی طرح سابق وزیر خارجہ اور ایف پی ایم کے رہنما جبران باسیل نے کہا ہے کہ ان کی جماعت نے حریری کی حمایت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔