سندھ حکومت کا کورونا رسک الاؤنس دوبارہ جاری کرنے کا فیصلہ

210
File photo

سندھ بھر میں سراپا احتجاج گرینڈ ہیلتھ الائنس سندھ کا احتجاج رنگ لے آیا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق سندھ حکومت نے گرینڈ ہیلتھ الائنس سندھ کا مطالبہ مانتے ہوئے کورونا رسک الاؤنس دوبارہ جاری کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

محکمہ خزانہ سندھ نے کورونا رسک الاؤنس روکنے سے متعلق نوٹی فکیشن واپس لیتے ہوئے نیا نوٹی فکیشن جاری کردیا۔

نئے نوٹی فکیشن کے مطابق ایک بار پھر کورونا ہیلتھ رسک الاؤنس بحال کردیا گیا ہے۔

محکمہ خزانہ سندھ کے مطابق کورونا وائرس کی ممکنہ دوسری لہر کے باعث کورونا رسک الاؤنس جاری کیا گیا ہے۔

کورونا رسک الاؤنس جاری کرنے کا فیصلہ سرکاری اسپتالوں میں ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل عملے کے احتجاج پر کیا گیا۔

گرینڈ ہیلتھ الائنس سندھ نے 12 اکتوبر 2020 کو صوبے بھر کے سرکاری اسپتالوں میں او پی ڈی کا مکمل بائیکاٹ کرنے کا اعلان کیا تھا۔

گرینڈ ہیلتھ الائنس سندھ نے مطالبہ کیا تھا کہ کورونا وارڈز و سینٹرز میں کام کرنے والے طبی عملے کا ہیلتھ رسک الاونس نہ روکا جائے۔ ہیلتھ رسک الاونس روکنے کا فیصلہ واپس لیا جائے اور دیگر مطالبات  منظور کئے جائیں۔

گرینڈ ہیلتھ الائنس سندھ کا سرکاری اسپتالوں میں احتجاجاً کام چھوڑنے سے کئی مریض اور ان کے واحقین کو پریشانی کا شامنا ہوا۔ مریضوں کو مجبوراً نجی اسپتالوں میں منتقل کرنا پڑا۔