پنگریو، بارشوں کے بعد مچھروں اور مکھیوں کی یلغار

19

پنگریو (نمائندہ جسارت) پنگریو اور زیریں سندھ کے دیگر علاقوں میں ہونے والی قیامت خیز بارشوں کے بعد مچھروں اور مکھیوں کی یلغار کے باعث بڑے پیمانے پر ملیریا، ٹائیفائیڈ، ڈائریا اور جگرکے امراض پھیل گئے، نجی وسرکاری اسپتال ان امراض سے متاثرہ مریضوں سے بھرگئے، بارشوں اورسیوریج کے پانی کی نکاسی نہ ہونے کے باعث مچھروں کی افزائش میں زبردست اضافے سے لوگ مختلف امراض کا شکار ہوگئے ہیں۔ مکھیوں اور مچھروں کے خاتمے کے لیے متعلقہ صوبائی اور بلدیاتی اداروں کی جانب سے اسپرے نہیں کرایا جارہا، مچھروں کی بہتات کے باعث زیریں سندھ کے عوام سرشام ہی بستروں میں دبک جاتے ہیں۔ سیاسی و سماجی تنظیموں نے شدید احتجاج کیا، رہنمائوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اسپرے نہ کرانے کے باعث زیریں سندھ میں روزانہ سیکڑوں افراد ڈائریا، گیسٹرو، ٹائیفائیڈ، ملیریا اور جگر کے امراض کا شکار ہورہے ہیں اور زیریں سندھ کے سرکاری ونجی اسپتال ان امراض سے متاثرہ افراد سے بھرے ہوئے ہیں مگر متعلقہ ادارے خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ رہنمائوں نے متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا کہ پنگریو اور گردونواح سمیت بارش متاثرہ علاقوں میں فوری طور پر مچھر اور مکھی مار اسپرے کرایا جائے تاکہ عوام مہلک امراض سے بچ سکیں۔