خالد خان کی قیادت میں قومی عجائب گھریونین کا کامیاب دھرنا

41

نیشنل لیبرفیڈریشن کراچی کی ملحقہ یونین قومی عجائب گھر ورکرز یونین کاادارہ کی نجکاری اورتنخواہوںکی عدم ادائیگی پرقومی میوزیم کراچی کے مین گیٹ پراحتجاجی دھرنا دیاگیا۔جس میں نیشنل لیبر فیڈریشن کراچی کے صدرخالدخان، نائب صدرمحمدسلیم، کوہ نورسوپ یونین کے جنرل سیکرٹری اسرار احمد سواتی، ہاشمی کین کے جنرل سیکرٹری خواجہ مبشر،سویاسپریم آئل کے رہنما ارشادعلی بھٹو اور دیگر عہدیداران نے بھی دھرنے میں شرکت کی۔NLF کراچی کے صدر خالد خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ کی جانب سے ادارے کو NGO کے حوالے کرنے کا منصوبہ بنایا جارہا ہے جوکسی صورت میں قابل قبول نہیں ہوگا۔ وفاقی حکومت قومی عجائب گھر کراچی کو تباہی کی طرف دھکیل رہی ہے۔ NLF وفاقی حکومت کے اس اقدام کے خلاف بھرپور احتجاج کرے گی۔اسی دوران وفاقی وزیرشفقت محمودکیمپ میں تشریف لائے اور مذ اکرات کرتے ہوئے یہ یقین دہانی کروائی کہ قومی عجائب گھر ہماراقومی اثاثہ ہے جس کی نجکاری کا وفاقی حکومت کاکوئی ارادہ نہیں تنخواہیں اور دیگر مزدور مسائل بہت جلد حل کیے جائیں گے۔ میں وزیراعظم پاکستان سے آپ کے مسائل پربات کروںگا۔وفاقی وزیر شفقت محمود نے نیشنل لیبر فیڈریشن کراچی کے صدرخالدخان اورقومی عجائب گھر ورکرز یونین کے صدر علی رضاکو مزدورمسائل جلداز جلد حل کرنے کی یقین دہانی کروائی۔جس پر NLF کراچی کے صدر خالد خان نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا۔یونین کے صدر اور جنرل سیکرٹری سمیت یونین کے تمام ممبران نے نیشنل لیبرفیڈریشن کراچی کی اس کامیاب جدوجہد پرصدرخالدخان اورپوری ٹیم کا شکریہ اداکیا۔