شکارپور، موبائل فون کی دکان سے چور قیمتی سامان چوری کرکے فرار

8

شکارپور (نمائندہ جسارت) شکارپور میں بے امنی پر سندھ حکومت کی خاموشی سوالیہ نشان ہے، تاریخی شہر شکارپور میں بے امنی، قتل، گن پوائنٹ پر لوٹ مار کے باجود بھی سندھ حکومت خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔ گزشتہ رات تھانہ خانپور کی حدود مین بازار میں عمران آرائیں کی موبائل فون کی دکان کے تالے توڑ کر نامعلوم چور ہزاروں روپے مالیت کے موبائل فون، چارجرز اور دیگر قیمتی سامان چوری کرکے فرار ہوگئے۔ دوسری جانب شکارپور سے خانپور ڈیوٹی پر جاتے ہوئے نیشنل ہائی وے یعقوب لاڑو کے مقام تھانہ خانپور کی حدود میں تین ڈاکو موٹر سائیکل سوار تیل کمپنی کے ملازم صغیر بھٹی اور ان کے دو دوستوں سے سی ڈی 70 موٹر سائیکل، موبائل فون اور 28 ہزار نقد گن پوائنٹ پر لوٹ کر فرار ہوگئے۔ لوگ بے امنی کی وجہ سے گھروں سے نکلتے نہیں ہیں اس کے ساتھ کاروبار اور تجارت بھی متاثر ہورہی ہے۔ ایک ہفتہ قبل لکھیدر تھانے کے حدود گھنٹہ گھر کے سامنے سے علی احمد بروہی کی موٹر سائیکل چور چوری کرکے فرار ہوگئے تھے، سی سی ٹی وی کیمرے میں نشاندہی کے باوجود بھی پولیس چوروں کو پکڑنے میں ناکام دکھائی دے رہی ہے۔ متاثرہ افراد کا کہنا ہے کہ لوٹی ہوئی موٹر سائیکلیں، موبائل فون اور نقدی واپس کروا کر شکارپور کا امن و امان بحال کروایا جائے۔