نواز شریف نے باجوہ نہیں فوج پر حملہ کیا ، وزیر اعظم

29
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان ٹائیگر فورس کنونشن سے خطاب کررہے ہیں

 

اسلام آباد (خبر ایجنسیاں+مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے گوجرانوالہ میں پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے پہلے جلسے کو سرکس قرار دیتے ہوئے کہا کہ لیگی قائد نواز شریف نے جو زبان آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کیخلاف استعمال کی یہ جنرل باجوہ پر نہیں پاک فوج پر حملہ ہے،اپوزیشن مختلف عمران خان دیکھے گی، اب کسی ڈاکو کو پروڈکشن آرڈر نہیں ملے گا، اب ان کو کوئی وی آئی پی جیل نہیں ملے گی بلکہ عام جیل میں ڈالیں گے، مقابلہ کرکے دکھاؤں گا،عدلیہ اور نیب کو پیغام دینا چاہتا ہوں کہ لوگ تنگ آگئے ہیں اور انصاف چاہتے ہیں، مقدمے کب عدالت میں مکمل ہوں گے، حکومت ہر طرح کی مدد دینے کو تیارہے، ان کے کیسز کی روز سماعت کرکے معاملہ ختم کریں۔ان خیالات کا اظہار وزیراعظم نے ٹائیگر فورس پورٹل کے افتتاح کے بعد تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعظم کی جانب سے 11سال پہلے کی وڈیو جاری کی گئی جس میں دکھایا گیا کہ عمران خان وڈیو میں کہہ رہے ہیں کہ نواز شریف، آصف زرداری سمیت تمام لوگوں
نے اکٹھا ہو جانا ہے۔ یہ آج ہو گئے ہیں۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ رات 2 بچوں نے تقریب سے خطاب کیا، دونوں بچوں پر تبصرہ کرنا فضول ہے، بغیر جدوجہد کرنے والا لیڈر نہیں بنتا۔ 11 سال پہلے پیش گوئی کی تھی کہ یہ سب چور اکٹھے ہو جائیں گے۔ 11سال پہلے کہا تھا کہ یہ سرکس ہو گا، چوروں کی چوری پر ہاتھ پڑے گا تو نورا کشتی کرنے والے اکٹھے ہو جائیں گے۔وزیراعظم نے پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے صدر مولانا فضل الرحمن کو 12 واں کھلاڑی قرار دیتے ہوئے کہا کہ12 ویںکھلاڑی کی بات نہیں کرنا چاہتا۔ انہوں نے نواز شریف کو گیدڑ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ دم دبا کر بھاگا تھا، وہاں بیٹھ کر جو زبان آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کیخلاف استعمال کی یہ جنرل باجوہ پر نہیں پاک فوج پر حملہ ہے۔ یہی بات بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی کر رہا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف فوج میں انتشار پھیلانے کی کوشش کر رہا ہے اور اسرائیل اور بھارت کی لابی سے مدد مانگ رہا ہے۔ میرے پاس تمام معلومات ہیں لیگی قائد کیا کر رہے ہیں۔ نواز شریف سنو! آج کے بعد میری پوری کوشش ہے کہ تمہیں وطن واپس لایا جائے اور عام آدمی والی جیل میں رکھا جائے، تم واپس آؤ اب میں تمہیں دیکھ لیتا ہوںوزیراعظم کا کہنا تھا کہ نریندرا مودی کی حکومت پاکستان سے نفرت کرتی ہے، 72 سال سے کبھی ایسی حکومت بھارت میں نہیں آئی۔ ہمارے فوجیوں پر حملے ہو رہے ہیں، ہمارے فوجی جان کی قربانی دے رہے ہیں۔ چند روز قبل 20 سیکورٹی اہلکاروں نے شہادت پائی۔ یہ لوگ ہمارے لیے اور ملک کے لیے جانیں قربان کر رہے ہیں۔شہباز شریف کے اوپر 23 ارب روپے کا انکشاف ہوا ہے، عدالت میں کلیئر ہونے تک کوئی پروڈکشن آرڈر نہیں ملے گا۔ شریف برادران کا پیسہ خدا ہے، ان لوگوں نے جو ملک کے ساتھ کیا وہ میر جعفر اور میر صادق پہلے کر چکے ہیں، صرف فائدوں کے لیے قوموں کو غلام بنایا ہوا تھا۔ اسی وجہ سے مسلم لیگ ن پنجاب کی جماعت بن کر رہ گئی ہے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس صاحب سے درخواست ہے کہ حکومت آپ کی مدد کرنے کے لیے تیار ہے، خدا کے لیے کیسز مکمل کروائیں اور قوم کا لوٹا ہوا پیسے عوام کو ملے گا، نیب چیئر مین سے بھی مطالبہ ہے کہ کیسز کو منطقی انجام تک پہنچائیں، آپ کی مدد کرنے کے لیے تیار ہیں۔ وزیراعظم نے انکشاف کیا کہ خواجہ آصف نے 2018ء کے الیکشن میں ہارنے کے دوران جنرل باجوہ کو ٹیلیفون کیا اور کہا کہ میں الیکشن ہار رہا ہوں۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کوئی حکومت عوام کے بغیر اپنا اہداف حاصل نہیں کر سکتی، اگلے 3 سالوں میں 10 ارب درخت لگانے ہیں۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ گندم کم ہونے کی بڑی وجہ غیر متوقع طور پر بارشیں ہیں، گندم کا جتنا بھی خسارہ تھا وہ امپورٹ کر لیا ہے۔ گندم ذخیرہ اندوزی کر لی گئی جس کے باعث قیمتیں بڑھیں، اس پر قابو پانے کے لیے مجھے ٹائیگر فورس کی ضرورت ہے۔ انہوں نے ٹائیگر فورس کو ہدایت کی کہ کہیں خود جاکر مداخلت نہیں کرنی، موبائل فون کے ذریعے تصویر لے کر پورٹل پر ڈالنی ہے پھر انتظامیہ کا کام ایکشن لینا ہے، دکانوں پر قیمتوں کی فہرست نہ لگی ہو تو اس کی بھی تصویر دینی ہے۔