مولانا عادل کے قاتلوں جلد گرفتار کرلیں گے ،گورنر ،وزیراعلیٰ سندھ

150

کراچی(نمائندہ جسارت)گورنر سندھ عمران اسماعیل نے جامعہ فاروقیہ میں مولانا عادل خان کے صاحبزادوں سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے شہید عادل خان کے درجات کی بلندی اور لواحقین کے لیے صبر جمیل کی دعا بھی کی۔اس موقع پر رکن سندھ اسمبلی سعید آفریدی بھی موجود تھے۔ گورنرسندھ نے شہید کے صاحبزادوں سے کہا کہ مولانا عادل خان کی شہادت سے ملک ایک جید عالم دین اور مدبر سے محروم ہوگیا ہے ، شہید نے ہمیشہ مذہبی ہم آہنگی کا درس دیا ،ان کی مذہبی خدمات ہمیشہ ان کی یاد دلاتی رہیں گی۔بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے گورنرسندھ نے کہا کہ مولانا عادل خان شہید پر دہشت گرد حملہ بہت افسوسناک واقعہ ہے ،ہم ایک نہایت قیمتی شخص سے محروم ہوگئے ہیں ،مولانا عادل خان شہید نے ہمیشہ رواداری اور مذہبی ہم آہنگی کا درس دیا اور آخری سانس تک اسلام کی ترویج میں مصروف رہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ ٹارکٹ کلنگ ہے جس کے تانے بانے سازشی عناصر سے ملتے ہیں ،اس ٹارگٹ کلنگ کا مقصد افرا تفری پھیلا نا تھا لیکن حکومت اور عوام ملک دشمنوں کی سازشوں سے باخبر ہیں بالخصوص علمائے کرام نے اس نازک صورتحال میں جس تحمل، صبر اور بردباری کا مظاہرہ کیا وہ اپنی مثال آپ ہے ،ہمیں بیرونی عناصر کی ہر سازش سے ہوشیار رہنا ہوگا۔ایک سوال کے جواب میں گورنرسندھ نے کہا کہ قاتلوں کو بہت جلد کیفر کردار تک پہنچائیں گے،مجرموں کی گرفتاری کا یقین دلاتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ شدید غم کی اس گھڑی میں بھی جامعہ فاروقیہ کی طرف سے امن کا پیغام قابل تحسین ہے۔علاوہ ازیںوزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ جامعہ فاروقیہ پہنچے جہاں انہوں نے مولانا عادل خان کی شہادت پر ان کے بھائی مولانا عبیداللہ خالد اور صاحبزادوں مفتی محمد انس اور مفتی عمیر سے تعزیت کی۔اس موقع پر مفتی تقی عثمانی ‘ مولانا طارق جمیل اور مولانا حنیف جالندھری بھی موجود تھے۔ وزیراعلیٰ سندھ کے ہمراہ ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن بھی تھے۔وزیراعلیٰ سندھ نے شہید مولانا عادل خان کے ورثاء اور ان کے ساتھیوں سے کہا کہ پولیس قاتلوں کو گرفتار کرکے ان کو کیفر کردار تک پہنچائے گی۔انہوں نے کہا کہ یہ شہر میں امن کو خراب کرنے کی سازش تھی لیکن ہم انہیں کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔وزیراعلیٰ سندھ نے حکو مت سے تعاون کرنے اور اس ناقابل تلافی نقصان کو برداشت کرنے کیلیے صبر کا مظاہرہ کرنے پر شہید مولانا عادل کے اہل خانہ کا شکریہ ادا کیا۔