افغان تنازع کا حل سیاسی مذاکرات ہی ہیں، عارف علوی

122

اسلام آباد (نمائندہ جسارت) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ افغان تنازعے کا حل فوجی نہیں اور سیاسی مذاکرات ہی آگے بڑھنے کا راستہ ہیں، افغان قیادت کو اس مسئلے کے لیے تاریخی موقع سے فائدہ اٹھانا چاہیے، پاکستان افغانستان کے مستقبل کے حوالے سے افغان عوام کے ساتھ کھڑا ہے، افغان امن عمل پاکستان کے کردار کو عالمی برادری نے سراہا ہے، دوحا میں بین الافغان مذاکرات کا آغاز ایک سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں مفاہمت کے بارے میں افغانستان کی اعلیٰ قومی کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر عبداللہ عبداللہ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ افغانستان میں تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں ہے بلکہ سیاسی مذاکرات کے ذریعے حل ہی آگے بڑھنے کا واحد راستہ ہے۔صدر عارف علوی نے کہا کہ افغان امن عمل میں پاکستان کے کردار کو عالمی برادری کی جانب سے سراہا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دوحا میں بین الافغان مذاکرات کا آغاز بارش کا پہلا قطرہ ہے۔انہوں نے اس بات پرزوردیا کہ افغان قیادت کو تعمیری، جامع اور وسیع البنیاد و سیاسی حل کے لیے مل کر کام کرنے کے اس تاریخی موقع سے فائدہ اٹھانا چاہیے۔صدر علوی نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان افغانستان کے مستقبل کے حوالے سے افغان قوم کی جانب سے کیے گئے فیصلوں پر ان کے ساتھ کھڑا ہے۔صدر نے خطے میں امن کی بحالی نہ چاہنے والے عناصر پرنظر رکھنے کی ضرورت پر بھی زوردیا۔انہوں نے کہا کہ افغانستان میں امن پاکستان اور افغانستان کیساتھ خطے میں اقتصادی صلاحیت کو بروئے کار لانے کے لیے ناگزیر ہے۔